News Detail Banner

نیشنل کریکولم کونسل قومی نصابِ تعلیم کو سیکولر بنانے کے اقدامات کر رہی ہےجو ناقابلِ قبول ہے،لیاقت بلوچ

1سال پہلے

لاہور14 جولائی 2021ء

    نائب امیر جماعت اسلامی ، سیاسی انتخابی کمیٹی کے صدر لیاقت بلوچ نے لاہور جماعت کی سیاسی کمیٹی کے ارکان سے خطاب اور مزدور رہنماﺅں سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ وزیراعظم عمران خان نے امریکی اور حکومتی آستینوںمیں براجمان سیکولر لابی کے دباﺅ میں 2018 ءمیں نصاب تعلیم ، یکساں نظام تعلیم کے حوالے سے جو کونسل بنائی ہے اس کے نتائج خطرناک شکل میں سامنے آگئے ہیں ۔ نیشنل کریکولم کونسل میں اسلامی دو قومی نظریہ کے باغی دہریوں ، ملحدوں ، سرمایہ داری اور سامراجی ذہنی غلاموں کو بھر دیاجو چن چن کر قومی نصاب تعلیم کو سیکولر بنانے کے اقدامات کر رہے ہیں ۔اردو، انگریزی ،معاشرتی علوم سے دینی لوازمہ خارج کیا جارہاہے ۔ ریاست مدینہ نظام کی دعوے دار حکومت ریاستی طاقت سے عوام کے ساتھ فریب کر رہی ہے ۔ 2014 ءسے زیر سماعت مقدمہ میں مسلم اکثریت کی کوئی نمائندگی نہیں ۔ وزارت تعلیم امریکی ورلڈ آرڈر اور عالمی این جی اوز امریکی وزارت خارجہ کے ذیلی دفاتر میں غلام بنی ہوئی ہے ۔ محب وطن وکلا اور دینی قیادت کو ذمہ داری قبول کرنی چاہیے اور کیس میں پارٹی بن کر پوری محنت کے ساتھ مسلم اکثریت کے دینی اخلاقی تہذیبی اور تعلیمی حقوق کا تحفظ کیا جائے ۔

    لیاقت بلوچ نے کہاکہ سرمایہ دارانہ نظام خیانت ، فساد اور غریب عوام کا خون نچوڑنے کا غیر منصفانہ نظام ۔ سرمایہ دارانہ نظام نے کرپشن کو فروغ دیا اور عام انسانوں کو مسائل ، مشکلات اور پریشانیوں اور نان شبینہ کی تگ دو میں مبتلا رکھنا ہی اس کا ہدف ہے ۔کرپشن کے خاتمہ کے لیے ریاستی نظام کو سرمایہ دارانہ مغربی نظام سے نجات دلانے اور قرآن وسنت کے غلبہ کے ساتھ اسلامی معاشی نظام کے نفاذ کی سنجیدہ جدوجہد کرنا ہوگی وگرنہ غربت ، بے روزگاری ، افراط زر ، قرضوں اور سود کی لعنت قومی آزادی ، وقار اور عوامی خوشحالی کی بربادی کے لیے بلیک وارنٹ بنتی جائے گی ۔ جماعت اسلامی مزدوروں کسانوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے ملک گیر جدوجہد کا ساتھ دے گی ۔ مزدور کسان جماعت اسلامی کا ساتھ دیں پاکستان کو اسلامی خوشحال مستحکم اور باوقار بنائیں گے۔