News Detail Banner

پیر کو ہونے والا شٹ ڈاؤن گزشتہ تین ماہ کے دوران دوسرا ملک گیر بریک ڈاؤن ہے جس سے پہلے سے تباہ حال معیشت کو اربوں کا نقصان ہوا۔ سراج الحق

12دن پہلے

لاہور23جنوری 2023ء

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ دو صوبوں میں الیکشن مسائل کا حل نہیں، اس سے استحکام نہیں آئے گا۔ پورے ملک میں بیک وقت انتخابات ہوں جس کے لیے صوبوں سمیت مرکز میں بھی نگران سیٹ اپ تشکیل دیا جائے۔ قومی انتخابات کے لیے تمام قومی سیاسی جماعتیں مذاکرات کا آغاز کریں۔ وہ پیر کو منصورہ میں مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ اجلاس میں ملک کی سیاسی و معاشی صورت حال پر تفصیلی تبادلہ خیال ہوا۔

امیر جماعت نے کراچی میں جماعت اسلامی کی شاندار کامیابی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے اہلیان کراچی کا شکریہ ادا کیا اور جماعت اسلامی کراچی کی ٹیم کو مبارک باد دی۔ انھوں نے اس عہد کا اعادہ کیا کہ جماعت اسلامی سب کو ساتھ ملا کر کراچی کو امن، استحکام، ترقی اور خوشحالی دے گی، شہر کی روشنیاں واپس لائی جائیں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں جماعت اسلامی کی کامیابی پورے ملک کے لیے امید کی کرن ہے۔ پی ڈی ایم، پیپلزپارٹی اور پی ٹی آئی نے ملک کو عدم استحکام سے دوچار کیا۔ کرپٹ ٹرائیکا کی وجہ سے ترقی کا پہیہ جام ہوا اور ہر طرف تباہی آئی۔ 22کروڑ عوام مہنگائی، بدامنی اور بے روزگاری کی چکی میں پس رہے ہیں۔ ہزاروں کنٹینرز ایل سی نہ کھلنے کی وجہ سے کراچی کے سمندر میں کھڑے ہیں، ڈالر غائب ہے اور اس کی قدر میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے، پڑھے لکھے نوجوان مستقبل سے مایوس ملک چھوڑ کر جا رہے ہیں، عوام آٹے کی لائنوں میں کھڑے ہیں، بنیادی اشیائے خورونوش کی قیمتیں غریب اور سفید پوش طبقہ کی پہنچ سے مکمل دور ہو گئیں، لوگوں کے لیے ایک وقت کی روٹی کا انتظام مشکل ہو گیا، صحت اور تعلیم کا نظام بیٹھ گیا، ڈھائی کروڑ بچے غریب کی وجہ سے سکولوں سے باہر ہیں، 80فیصد سے زائد عوام کو پینے کا صاف پانی تک میسر نہیں، ان تمام حالات کی ذمہ دار حکمران جماعتیں ہیں۔ حکمرانوں نے اپنی جائدادیں بنائیں اور آف شورکمپنیاں بنائیں، ان کے بچے بیرون ملک اور خود یہاں ایکڑوں پر محیط محلات میں رہایش پذیر ہیں، عوام بنیادی ضروریات کے لیے ترس رہے ہیں۔ ٹرائیکا نے مل کر ملک کو سیاسی، سماجی اور معاشی لحاظ سے دیوالیہ کر دیا۔ 

سراج الحق نے بلوچستان کی مجموعی صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی و صوبائی حکومتوں نے مل کر بلوچستان کو محرومیاں دیں۔ انھوں نے حکمرانوں پر زور دیا کہ بلوچستان کے غریب عوام کے مطالبات پورے کیے جائیں۔ بلوچستان کے وسائل پر سب سے پہلا حق صوبے کے عوام کا ہے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت گوادر میں مولانا ہدایت الرحمن سمیت دیگر گرفتار رہنماؤں کو فوری طور پر رہا کرے اور گوادر کے رہایشیوں کو ان کے حقوق دیے جائیں۔

سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی ہی امید کی شمع ہے اور ملک کو بحرانوں سے نکالنے کی صلاحیت رکھتی ہے، عوام فیصلہ کرے اور ملک کو معاشی لحاظ سے تباہ کرنے والوں اور لٹیروں کا ووٹ کی طاقت سے احتساب کرے۔ انھوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ملک کو اسلامی نظام دے کر بانیان پاکستان کی امنگوں کے مطابق اسلامی فلاحی ریاست بنائے گی۔

امیر جماعت نے مطالبہ کیا کہ حکومت وفاقی شرعی عدالت کے سود سے متعلق فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ میں دائر اپیلیں واپس لے۔ جماعت اسلامی نے سودی نظام کے خاتمہ کے لیے طویل جدوجہد کی ہے۔ وفاقی شرعی عدالت نے سود کے خلاف واضح فیصلہ دے دیا ہے تو حکمران عوام کو اس فیصلے کے ثمرات سے محروم کرنے کی سازشیں کر رہے ہیں۔ معیشت کی بحالی کے لیے ضروری ہے کہ سودی نظام کا خاتمہ ہو۔ سود اللہ اور اس کے رسولؐ سے جنگ ہے، مگر اسلامی پاکستان کے حکمران اس جنگ کو جاری رکھنے پر بضد ہیں، اس سے بڑا سانحہ اور کیا ہو سکتا ہے۔

امیر جماعت نے ملک میں بجلی کے طویل بریک ڈاؤن کی تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ پیر کو ہونے والا شٹ ڈاؤن گزشتہ تین ماہ کے دوران دوسرا ملک گیر بریک ڈاؤن ہے جس سے پہلے سے تباہ حال معیشت کو اربوں کا نقصان ہوا۔ عوام اس بریک ڈاؤن کی وجوہات کے متلاشی ہیں، شفاف تحقیقات کر کے قوم کو حقائق سے آگاہ کیا جائے۔