News Detail Banner

پی ڈی ایم، پیپلزپارٹی کی حکومت مہنگائی بانٹنے میں مصروف، عام آدمی سے سوکھے نوالے بھی چھین لیے سراج الحق

5مہا پہلے

لاہوریکم جولائی2022ء

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ پی ڈی ایم، پیپلزپارٹی کی حکومت مہنگائی بانٹنے میں مصروف، عام آدمی سے سوکھے نوالے بھی چھین لیے۔ اشیائے ضروریہ کی قیمتیں آسمان پر، مہنگائی کی وجہ سے غریب عوام زمین پر گر پڑے۔ قوم کے صبر کا مزید امتحان نہ لیا جائے، وقت آگیا ہے کہ ملک کی حکمران اشرافیہ اب خود تھوڑی بہت قربانی دے اور اپنی مراعات کم کرے۔ ملک سے نوٹوں، لوٹوں اور بوٹوں کی سیاست ختم ہونی چاہیے۔ پی ٹی آئی کے دور حکومت میں جس مہنگائی کا آغاز ہوا، اتحادی حکومت نے اسے عروج پر پہنچا دیا۔ ملک کی تینوں بڑی سیاسی جماعتیں سودی نظام کی محافظ ہیں۔ پاکستان کا معاشی نظام اب اللہ اور اس کے رسولؐ کے ساتھ مزید جنگ کر کے آگے نہیں بڑھ سکتا۔ سودی نظام انسانیت کا قاتل اور خودکش نظام ہے۔ اللہ تعالیٰ سے گزشتہ گناہوں کی توبہ کر کے سودی معیشت کی بجائے اسلامی معاشی نظام کی طرف آنا ہو گا۔ جماعت اسلامی حقیقی معنوں میں پروگریسو، جمہوری، ترقی پسند اور اسلامی جماعت ہے۔ عوام ملک کو ترقی کی شاہراہ پر ڈالنے کے لیے ضمنی اور آئندہ انتخابات میں ترازو پر مہر لگائیں۔ ملک میں اب جماعت اسلامی ہی بہترین آپشن ہے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے گرین ٹاؤن لاہور میں ترازو کنونشن کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی محمد جاویدقصوری، امیر لاہور ذکراللہ مجاہداور ضمنی انتخاب کے حلقہ پی پی 167کے امیدوار خالد احمد بٹ بھی موجود تھے۔

سراج الحق نے کہا کہ ملک کے پولنگ سٹیشن ہی نہیں بلکہ جمہوریت بھی یرغمال ہے۔ ہمارا پہلے دن سے مطالبہ ہے کہ فوری طور پر انتخابی اصلاحات کی جائیں جس پر تمام سیاسی جماعتوں کا اتفاق ہو، لیکن پی ڈی ایم اور پیپلزپارٹی حکومت میں آنے کے بعد بھی انتخابی اصلاحات میں کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔ جب تک ملک میں شفاف انتخابات کا انعقاد نہیں ہو گا، عوام کی مرضی کی حکومت وجود میں نہیں آئے گی تب تک بہترین جمہوری عمل کا تسلسل برقرار نہیں رہے گا۔ انھوں نے کہا کہ حکومت ہوش کے ناخن لے اور سودی نظام کے دفاع سے باز رہے۔ حکومت وفاقی شرعی عدالت کے سودی نظام کے خاتمے کے لیے دیے گئے پانچ سال کے وقت میں فوری طور پر اس جانب عملی سفر کا آغاز کرے۔جماعت اسلامی وفاقی شرعی عدالت کے فیصلے پر عمل درآمد کرانے کے لیے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی اور ہم حکومت اور ان بنکوں کو مجبور کریں گے کہ وہ سودی نظام کے خاتمے کی راہ میں رکاوٹ نہ بنیں۔ کیوں کہ سودی نظام ملک کی موجودہ صورت حال اور بربادی کا سب سے بڑا ذمہ دار ہے۔

امیر جماعت نے کہا کہ سود اور کرپشن ام المسائل ہیں جب تک ان سے نجات حاصل نہیں کی جائے گی ملک ترقی کی راہ پر گامزن نہیں ہو سکے گا۔ جماعت اسلامی اس وقت ملک میں حقیقی اپوزیشن کا کردر ادا کر رہی ہے اور مظلوم عوام کی اصل نمائندہ جماعت ہے۔ ہم ایوانوں سے لے کر چوکوں چوراہوں میں عوام کے حقوق کی جنگ لڑیں گے اور آنے والے دنوں میں حکومت کے خلاف اپنی جدوجہد میں مزید تیزی لائیں گے۔ جماعت اسلامی مطالبہ کرتی ہے کہ حکومت غیر ترقیاتی اخراجات ختم کرے، کرپشن کے خاتمے کے لیے ٹھوس اور عملی اقدامات اٹھائے جائیں۔ حکومت عام آدمی پر بوجھ ڈالنے کی بجائے ان جاگیرداروں، وڈیروں اور کرپٹ سرمایہ داروں کی پراپرٹیز بیچ کر ملکی قرضے اتارے۔ انھوں نے کہا کہ عوام رونے دھونے کی بجائے ضمنی اور عام انتخابات میں ترازو پر مہر لگا کر استعمار کے ایجنٹوں کو مسترد کرے اور اہل، صالح اور ایماندار قیادت کو آگے لائے۔