News Detail Banner

قوم کو بتایا جائے کہ کرونا پیکیج کے 1240ارب روپے کہاں خرچ کیے گئے ہیں،محمد جاوید قصوری

1سال پہلے

لاہور 27 جولائی 2021

امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ پٹرول پر سیلز ٹیکس کے ساتھ ساتھ دیگر تمام ٹیکسز میں بھی نمایاں کمی کی جانی چاہیے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق حکومت فی لیٹر 40روپے تک ٹیکسز وصول کررہی ہے۔ عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے حکمرانوں کو سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ ڈنگ ٹپاؤ اور نمائشی اقدامات سے عوامی مشکلات میں کمی واقع نہیں ہوسکتی۔ ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مختلف پروگرامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاہے کہ ملک میں مہنگائی کا جن بے قابو ہے۔ ملک کی 40فیصد آبادی سطح غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہے۔ لوگوں کو دو وقت کی روٹی کا حصول بھی مشکل ہوگیا ہے۔ بے روزگاری کے باعث لوگ بمع اہل و عیال خود کشیاں کرنے پر مجبور ہیں۔ قوم سوال پوچھتی ہے کہ کہاں ہے وہ تبدیلی،جس میں عوام کو خوشحالی کے خواب دکھائے گئے تھے؟۔ انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے تبدیلی سرکار نے قوم سے خوشیاں چھین لی ہیں۔ گراں فروش اور کمیشن مافیا جب چاہتا ہے اشیاء خوردونوش مارکیٹ سے غائب کرکے عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنا شروع کردیتا ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔ قوم کو بتایا جائے کہ کرونا پیکیج کے 1240ارب روپے کہاں خرچ کئے گئے ہیں۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ پنجاب حکومت کی جانب سے موٹر سائیکل، رکشہ اور دیگر وہیکلز کے جرمانوں میں 125فیصد تک اضافے کا فیصلہ تشویشناک ہے۔ اس قسم کے اقدامات سے عوام کی مشکلات میں بے پناہ اضافہ ہوگا۔