News Detail Banner

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا منصورہ میں مرکزی یوتھ بورڈ کے اجلاس سے خطاب

12دن پہلے

16 جون 2022ء

لاہور امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ فرسودہ سودی نظام نے عوام کی زندگی کو اجیرن بنا دیا۔74 سالوں سے جاری کشکول مشن کو چھوڑ کر خود کفالت کا رستہ اپنانا ہو گا۔ جماعت اسلامی 25 جون سے سودی معیشت، مہنگائی اور کرپشن کے خلاف ٹرین مارچ کا آغاز کرئے گی سود کے خلاف وفاقی شرعی عدالت کے دو ٹوک فیصلے کے باوجود حکومت نے ابھی تک اس پر عمل درآمد کے لیے ایک قدم بھی نہیں اٹھایا جماعت اسلامی فیصلے پر مکمل عمل درآمد تک جدوجہد جاری رکھے گی حکومت اسلام آباد سے بھارتی سفیر کو واپس بھیجے اور نئی دہلی سے پاکستانی سفیر کو واپس بلایا جائے۔ اس صورتحال میں پاکستان کا ہر شہری ہندوستان سے کسی قسم کے تعلقات نہیں چاہتا ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں مرکزی یوتھ بورڈ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ٹرین مارچ کے حوالے سے پلاننگ اور تیاریوں کا جائزہ لیا گیا سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی امیر العظیم، مرکزی سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف، امیر وسطی پنجاب محمدجاوید قصوری مرکزی صدر جے آئی یوتھ زبیر احمد گوندل،امیر لاہور ذکر اللہ مجاہد سمیت ملک بھر سے ارکین یوتھ بورڈ نے بھی شرکت کی۔

سراج الحق نے کہا کہ حکمران اللہ کو ناراض کر کے گذشتہ کئی دہائیوں سے آئی ایم ایف کی خوشنودی کے لیے کام کر رہے ہیں جو لمحہ فکریہ ہے نوجوان ملک و ملت کا سرمایہ ہیں وقت آگیا ہے کہ اب نوجوان جھوٹ کی سیاست کو مسترد کرتے ہوئے حق اور سچ کا ساتھ دیں سودی نظام اور کرپشن بے برکتی کی اہم وجوہات ہیں جس کی وجہ سے معاشرہ اخلاقی زوال کا شکار ہو رہا ہے معاشرے میں سماجی اور اقتصادی مساوات صرف اسلامی نظام سے ہی آ سکتی ہے۔

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ ملک میں اب حقیقی تبدیلی کے لیے یوتھ کو شعور کیساتھ بوتھ پر آنے کی ضرورت ہے جماعت اسلامی نوجوانوں کے حقوق کی ضامن اور واحد مکمل جمہوری جماعت ہے جس کے دروازے نوجوانوں کے لیے کھلے ہوئے ہیں  بلدیاتی انتخابات میں بڑی تعداد میں یوتھ کو ٹکٹیں دیں گے۔یوتھ سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ سیاست میں شائستگی، ہمدردی اور بھائی چارے کے لیے اپنا مثبت کردار ادا کرئے۔

سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی کی جدوجہد کا مقصد ملک میں پرامن، جمہوری اسلامی انقلاب برپا کرنا، قوم اب ہمارا ساتھ دے۔ جماعت اسلامی کو موقع ملا تو ہم سکوک اور اجارہ کا نظام متعارف کرائیں گے اور معیشت کی زکوٰۃ، صدقات اور عْشر کے ذریعے تعمیر ہو گی۔

بھارت میں حکومتی ترجمانوں کی طرف سے حضور پاکﷺکی شان میں گستاخی کے واقعہ پر بات کرتے ہوئے امیر جماعت نے  حکمرانوں کے رویے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا کہ اسلام آباد سے بھارتی سفیر کو واپس بھیجے اور نئی دہلی سے پاکستانی سفیر کو واپس بلایا جائے۔ پاکستان کا ہر شہری ہندوستان سے کسی قسم کے تعلقات نہیں چاہتا۔ بھارت میں بی جے پی کی حکومت مسلمانوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہے۔مسلمان بیٹیوں کے سروں سے حجاب اتارے جا رہے ہیں، مساجد کی بے حرمتی ہو رہی، مگر ہمارے حکمران بے حس اور بزدل ثابت ہوئے۔ پاکستان کا بچہ بچہ حرمت رسولﷺ پر جان دینے کے لیے تیار ہے۔ انھوں نے عالم اسلام کے حکمرانوں سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ امت کے جذبات کی ترجمانی کریں اور بزدلی نہ دکھائیں۔ انھوں نے کہا کہ ناموس رسالتﷺ کے تحفظ کے لیے جماعت اسلامی تحریک جاری رکھے گی۔