سید منور حسنؒ

سید منور حسنؒ

سید منور حسن اگست 1941 میں ہندوستان کے دارالحکومت دہلی میں پیدا ہوئے، 1947 میں والدین کے ہمراہ پاکستان ہجرت کر کے کراچی میں رہائش اختیار کی۔

سید منور حسن نے اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز 1957 میں NSF کے رہنما کی حیثیت سے کیا۔ 1959 میں وہ NSF کے صدر منتخب ہوئے۔ تاہم انہوں نے 1960 میں نظریاتی رخ اختیار کیا اور اسلامی جمعیت طلبہ میں شامل ہوگئے۔ انھوں نے 1967 میں مرکزی دھارے کی سیاست میں شامل ہونے تک مختلف ذمہ داریوں پر فائز رہتے ہوئے اسلامی جمعیت طلبہ کے لیے خدمات انجام دیں۔ 1962 میں کراچی یونیورسٹی کے ناظم، پھر 1963 میں کراچی کے ناظم، اور 1964 میں اسلامی جمعیت طلبہ کے ناظم اعلیٰ منتخب ہوئے، اور مسلسل تین مرتبہ ناظم اعلی منتخب ہوتے رہے۔

اپنی فصاحت کی وجہ سے مشہور ،سید منور حسن نے کراچی کے سیاسی اور ادبی حلقوں میں شہرت حاصل کی۔ 1967 میں انھوں نے جماعت اسلامی میں شمولیت اختیار کی۔

1992سید منور حسن ، امیر قاضی حسین احمد ؒ کے ساتھ سیکرٹری جنرل کے منصب پر فائز ہوئے۔ قبل ازیں وہ ڈپٹی سیکرٹری جنرل، کراچی کے امیر کی ذمہ داریوں پر فائز رہے۔ ایک موقع پر سید منور حسن اور ان کی اہلیہ عائشہ منور نے بیک وقت جماعت اسلامی کے مردوں اور خواتین ونگز کے سیکرٹری جنرل کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔

2009ء میں سید منورحسن جماعت اسلامی کے امیر منتخب ہوئے۔ 2014ء میں جماعت اسلامی کی امارت کے منصب سے فراغت کے بعد معارف اسلامی ریسرچ اکیڈمی میں خود کو ادبی اور تحقیقی کام کے لیے وقف کر دیا۔ علالت کی بنا پرچند ہفتے کراچی کے نجی ہسپتال میں زیر علاج رہنے بعد سید منورحسن جمعہ کے روز اپنے خالق حقیقی سے جاملے۔ انا للہ و انا الیہ راجعون