Jamaat-e-Islami Pakistan |

اسد اللہ بھٹو نائب امیر

  1. اسد اللہ بھٹو 1946ءمیں سکھر شہر میں پیدا ہوئے۔ 1967ءمیں اسلامیہ کالج سے بی اے کیا جبکہ 1969ءمیں بدرعالم لا کالج سکھر سے ایل ایل بی کی ڈگری حاصل کی۔اور اس کے بعدسوشیالوجی(عمرانیات) میں ماسٹرکی سند حاصل کی۔

     دسمبر1970ءسے شعبہ وکالت سے وابستہ ہیں آپ بچپن سے ہی تعلیمی و سماجی سرگرمیوں کی طرف مائل تھے۔ساتویں کلاس میں ”انجمن شوق اسلام“ نامی بچوں کی تنظیم کے بانی صدر منتخب ہوئے۔ اسکا مقصد طلبہ میں شوقِ علم اورمحبت اسلام پیدا کرنا تھا۔ غریب بچوں کوزیور تعلیم سے آراستہ کرنے اور روزگار کی فراہمی کے لیے 1966ءمیں ”سٹیزن سوشل ویلفیئر سوسائٹی“ بنائی۔ سوسائٹی کے زیراہتمام  سٹیزن کوچنگ سنٹرقائم کیاگیا جس میں تقریباً 150بچے شام کے اوقات میں مفت تعلیم حاصل کرتے تھے۔اس وقت کی اقوام متحدہ کی سیکرٹری سوشل ویلفیئر نے سکھر کادورہ کیا اور سوسائٹی کی خدمات کوسراہتے ہوئے سرٹیفیکیٹ دیا۔
    سید مودودی کی تعلیمات سے متاثر ہوکر1969ءمیں جماعت اسلامی میں شامل ہوئے۔جنوری1973ءمیں آپ کی رکنیت منظور ہوئی۔1974ءمیں مقامی جماعت کے امیر بنے، اس کے بعد سے مسلسل مختلف ذمہ داریوں پر فائز رہے ہیں۔ 1985ءسے 1991تک جماعت اسلامی سندھ کے پولیٹیکل بیورو کے صدر رہے۔ 1996ءسے 2002ء جماعت اسلامی سند ھ کے امیراور بعدازاں 2002ءسے 2006ءتک جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر رہے۔ اس دوران متحدہ مجلس عمل بنی تو انہیں صوبہ سندھ کاصدرمنتخب کیاگیا۔نیز دوبارہ 2005تا2011جماعت اسلامی سندھ کے امیر رہے ۔اسداللہ بھٹو اب بحثیت نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان کی ذمہ داری ادا کررہے ہیں۔

    اسد اللہ بھٹو2002ءکے انتخابات میں کراچی کے حلقہ 253سے ممبر قومی اسمبلی منتخب ہوئے۔ آپ ہیومن رائٹس نیٹ ورک پاکستان کے بانی جنرل سیکرٹری ہیں۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس