Jamaat-e-Islami Pakistan |

اہم خبریں

جنسی درندگی سمیت دیگر جرائم کے خاتمے کےلئے شرعی سزاؤں پر عمل درآمد نا گزیر ہے،خان افضل ایڈوووکیٹ


کراچی(اسٹاف رپورٹر) 16ستمبر 2020 اسلامک لائرز موومنٹ کے مرکزی صدر ایڈووکیٹ خان افضل نے کہا ہے کہ ملک میں شرعی سزاو¿ں کے عملی نفاذ سے ہی خواتین و بچوں سے جنسی ذیادتی درندگی و دیگر جرائم کا سد باب ممکن ہے۔ اسلام میں جو سزائیں مقرر کی گئیں ہیں اسے سامنے رکھ کر معاشرے کو عبرت دینا ہے تاکہ اس سے معاشرے کی اصلاح اور درندگی سمیت جرائم پیشہ لوگ عبرت حاصل کریں۔ انہوں نے سانحہ موٹر وے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس میں ملوث درندہ صفت لوگوں کسی بھی رعایت کے مستحق نہیں ہیں ایسے لوگوں کوسزائے موت دی جائے۔ اگر اس سے قبل اس درندگی جیسے جرائم میں ملوث ملزمان کو سزائے موت مقرر کر کے اس پر عمل کیا جاتا تو موٹروے لاہور اور کراچی میں مروہ جیسے سانحات رونما نہ ہوتے۔ آئی ایل ایم پاکستان کے صدر نے مزید کہا کہ قانون سازی کرنے کے بعد اس عمل پر عمل اڈرآمد ضروری ہے۔ انہوں نے کہ کہ غریب و امیر کےلئے ایک ہی قانون ہونا چاہیے۔ بعض لوگوں کی جانب سے سخت سزاو¿ں کے بارے میں مخالفت بے جا اور بے حسی کی انتہا ہے۔ جنسی درندگی کے پے در پے واقعات سے محسوس ہوتا ہے کہ حکومت شہریوں کی جان و مال اور عزت و آبرو کی حفاظت میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔ اس لئے جنسی درندگی سمیت دیگر جرائم کے خاتمے کےلئے زرعی سزاو¿ں پر عمل درآمد نا گزیر ہے۔ 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس