Jamaat-e-Islami Pakistan |

حکومت کو ریاستی سطح پر حیا و حجاب کے فروغ کے اقدامات کرنے چاہئیں،دردانہ صدیقی


لاہور3ستمبر 2020ء
جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین کی مرکزی سیکرٹری جنرل دردانہ صدیقی نے کہاہے کہ عورت تعمیر ملت کے لئے درکار اہم اینٹ ہے، قدرت نے شرم و حیا عورت کی خمیر میں شامل رکھی ہے، اپنی فطرت سے ہٹنے کے باعث آج عورت ظلم اور خاندان تباہی کا شکار ہیں، دنیا بھر میں عورت کو آج پروڈکٹ اور شو پیس بنا کر رکھ دیا گیا ہے جو ہر دردمند دل رکھنے والے کے لیے تکلیف دہ امر ہے، حیا و حجاب کے فروغ سے ایک پاکیزہ معاشرہ پروان چڑھ سکتا ہے، حکومت کو ریاستی سطح پر حیا و حجاب کے فروغ کے اقدامات کرنے چاہئیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے انٹرنیشنل حجاب ویبینار سے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ حجاب ویبینار کے اس عالمی فورم میں سوئیڈن، جاپان، یو کے، امریکہ ، ناروے، نائیجیریا، کینیا، قطر، بحرین، سعودی عرب، کینیڈا، جرمنی، فرانس، اٹلی، ملائشیا سمیت دنیا بھر کے 30 ممالک سے ڈھائی سو سے زائد خواتین شریک تھیں۔ شرکا نے پوری دنیا میں مسلم خواتین کو درپیش پردے کے مسائل پر روشنی ڈالی اور اس کے حل پر سیر حاصل گفتگو کی۔
دردانہ صدیقی نے اپنے خطاب میں کہا کہ عورت ماں کے روپ مشفق اور مہربان پیکر ،بیوی کے روپ میں محبت کرنے والی غمگسار، بہن کے روپ میں معاون و مدگار دوست اور بیٹی کی روپ میں مہربان و نیک بخت ہے۔ ان ذمہ دار کرداروں کو نبھانے کے ساتھ ساتھ اسلام میں اس قیمتی نگینے کی حفاظت کا بھی بخوبی انتظام کیا ہے۔ حسن انتظام یہ ہے کہ مرد و خواتین کو حیا کے مخصوص اصول و آداب سکھانے کے ساتھ ساتھ ایسے معاشرے کو پروان چڑھانے کے اصول بھی بیان کردئیے گئے جہاں معاشرتی آداب اور قانونی سزائیں انسان کو حیوان بننے سے روک دیتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حیا اور حجاب کے یہ قوانین خالق کائنات کی خاص رحمت کا مظہر ہیں،جہاں بھی حیا کے تقاضوں کو پورا کیا گیا وہاں پاک دامن اور صالح معاشرہ وجود میں آیا اور انسانیت نے فحاشی ،ہراسانی،زنا اور ہوس سے نجات پا لی۔ اگر ریاست کی سطح پر حیا و حجاب کے فروغ کے لیے اقدامات کیے جائیں تو ایک پاکیزہ معاشرہ تشکیل دینا مشکل نہیں ہوگا۔ 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس