Jamaat-e-Islami Pakistan |

لاہورکالج فار وومن یونیورسٹی کو یونیورسٹی آف جھنگ میں ضم کرنے کے فیصلے کو فوری طور پر واپس لیا جائے،امیر العظیم



لاہور12اگست2020ئ
سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان امیر العظیم نے پنجاب حکومت سے مطالبہ کیاہے کہ لاہور کالج فار وومن یونیورسٹی کو یونیورسٹی آف جھنگ میں ضم کرنے کے فیصلے کو فوری طور پر واپس لیا جائے اورلاہور کالج فار وومن یونیورسٹی کو اس کے اصل مقاصد الگ حیثیت میںقائم رکھا جائے ۔ کچھ سیاسی عناصر یونیورسٹی کیمپس کی زمین اور تعمیر کیلئے جاری ہونے والے کروڑوں روپے ہضم کرنے کے درپے ہیں اور وہ وومن یونیورسٹی کو جھنگ کالج میں ضم کرانے کی سازش کررہے ہیں حکومت ان عناصر سے خبردار رہے اور جھنگ ،ٹوبہ ٹیک سنگھ ،گوجرہ اور چنیوٹ کے عوام کے خواتین یونیورسٹی کی تعمیر کے دیرینہ مطالبہ کوپورا کیا جائے ۔وومن یونیورسٹی جھنگ کیمپس کو اس کی منظور شدہ جگہ گوجرہ بائی پاس روڈ پر ہی تعمیر کیا جائے اور یونیورسٹی کی تعمیر کیلئے جاری ہونے والے اربوں روپے کے فنڈ کا فرانزک آڈٹ کروایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے اس طرف فوری توجہ نہ دی تو علاقے کے لاکھوں عوام حکومت کے خلاف شدید احتجاج کریں گے اور کسی صورت بھی وومن یونیورسٹی کو یونیورسٹی آف جھنگ میں ضم نہیں ہونے دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ 2005سے قائم لاہور کالج فاروومن یونیورسٹی جھنگ میں ہزاروں بچیاں مختلف9مضامین میں بی ایس آنرز تین میں ایم اے اورایک میں ایم فل کی کلاسوں میں زیر تعلیم ہیں ۔یونیورسٹی چنیوٹ روڈ پر ایک سوکنال رقبہ پر کیمپس تعمیر ہے ۔جس میں اس وقت 1300بچیاں زیر تعلیم ہیں اور ہزاروں نے اپنی تعلیم یہاں سے مکمل کی ہے ۔اگراس یونیورسٹی کو یونیورسٹی آف جھنگ میں ضم کیا جاتا ہے تو بچیوں کی تعلیم خطرے میں پڑجائے گی کیونکہ والدین اپنی بچیوں کو مخلوط نظام تعلیم کے کسی ادارے میں داخل کروانے پر تیار نہیں ہونگے ۔اس لئے جھنگ اور اس کے گرد ونواح کے اضلاع اور شہروں کی طالبات کو مخلوط نظام تعلیم سے پاک صاف ستھرے ماحول میں اپنی تعلیم جاری رکھنے کا موقع دیا جائے ۔

 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس