Jamaat-e-Islami Pakistan |

معاشی ترقی کے تمام تردعووں کے باوجود مہنگائی نے عوام کی چیخیں نکال دی ہیں،محمد حسین محنتی


کراچی (اسٹاف رپورٹر) 11اگست 2020 جماعت اسلامی سندھ کے امیر و سابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ استحصالی نظام کے خاتمے اور اسلام کے عادلانہ نظام کے نفاذ کے بغیر کسانوں و ملک کی تقدیر نہیں بدل سکتی۔ زراعت کا شعبہ ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے اور ملک کی 70 فیصد آبادی زراعت سے وابستہ ہے مگر دیگر شعبوں کی طرح زراعت اور کاشتکا ر طبقہ بھی حکومتی عدم توجہ کی وجہ سے بدحالی کا شکار ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قباءآڈیٹوریم میں کسان بورڈ پاکستان کے نائب صدر عبدالجبار خان کی قیادت میں ملاقات کرنے والے وفد سے بات چیت کے دوران کیا۔ وفد نے صوبائی امیر کو سندھ سمیت پاکستان میں کسانوں کو درپیش مسائل کی صورتحال اور حکومتی بے حسی سے آگاہ کیا۔ محمد حسین محنتی نے کہا کہ معاشی ترقی کے تمام تردعووں کے باوجود مہنگائی نے عوام کی چیخیں نکال دیں ہیں۔حکومت کو ہرمحاذ پرناکامی کا سامانا ہے۔حکمران آٹا چینی پٹرول بجلی سمیت جس چیز کا بھی نوٹس لیتے ہیں ان کی قیمتیں آسمان پرچلی جاتی ہیں کہیں بھی حکومتی رٹ نظر نہیں آتی۔حکمرانوں کی اقرباءپروری اور مفاد پرستانہ پالیسیوں کی وجہ سے زراعت سمیت ہر شعبہ بدحالی کا شکار ہے۔ حکومت کسانوں کو درپیش مشکلات کو حل کرنے کےلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی نے ہمیشہ کسانوں اور مظلوم و پسے ہوئے طبقہ کی بات کی ہے اور ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت فی الفور کسانوں کی مشکلات کو ختم کرے اور ان کو ریلیف فراہم کیا جائے۔ کسان بورڈ پاکستان کے نائب صدر عبدالجبار خان نے کہا کہ کسان بورڈ کسانوں کا ملک گیر پلیٹ فارم ہے۔ ہم کسان برادری کے مسائل کو پارلیمنٹ سمیت ہر فورم پر اٹھا کر انہیں اپنا حق دلا کر رہیں گے کیونکہ ہمارا نعرہ ہے کہ کسان خوشحال تو ملک خوشحال ہے۔ انہوں نے کہاکہ10کروڑ کاشتکار مرکزی اور صوبائی حکومتوں کے ہوا میں معلق تمام دعووں کو مسترد کرتے ہیں۔اگر ریاست مدینہ بنانا مقصد ہے تو عملی کام کرنا ہو گا۔ زراعت سے وابستہ افراد جو کہ کل آبادی کا بالواسطہ44فیصداور بلا واسطہ 70فیصد ہیں کو مزید غربت کی طرف نہ دھکیلیں۔کسان جو ملک کی فوڈ سیکیورٹی کے ضامن ہیں اور دن رات محنت کر کے ملک کی 22کروڑ آبادی کی غذائی ضروریات کو پورا کر رہے ہیں انکے حالات زندگی کو بہتر بنانے کے اقدامات کئے جائیں۔ تبدیلی سرکار کی اب تک کی کارکردگی پر کاشتکار برادری کو شدید تحفظات ہیں اور ان میں تشویش پائی جاتی ہے۔کسان بورڈ کے مرکزی رہنما نے مطالبہ کیا کہ حکومت کھاد، بیج، ٹیوب ویل اور ڈیزل و بجلی سمیت زرعی مشینری کی قیمتوں میں واضح کمی کر کے کسانوں کو ریلیف دیا جائے۔ 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس