Jamaat-e-Islami Pakistan |

اہم خبریں

ملک کے نظام معیشت اور معاشرت کو تبدیل کیے بغیر کوئی تبدیلی نہیں آسکتی،ڈاکٹر ذکراللہ مجاہد


2 جولائی 2020ء
لاہور( ) امیر جماعت اسلامی لاہور ڈاکٹرذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی کا نظام مالیات اس ملک کے حکمرانوں کیلئے ایک شاندار مثال کی حیثیت رکھتا ہے۔ ایک ایک پیسے کا حساب اس کا ریکارڈ اور سالانہ آڈٹ جماعت اسلامی کے مالیات کا خاصہ ہے۔ جماعت اسلامی کے ڈونرز کی طرف سے دیئے گئے عطیات امانت و دیانت اور خدا خوفی کے جذبے سے خرچ کیے جاتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے فنانس کمیٹی جماعت اسلامی لاہور کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لاہور انجینئر اخلاق احمد، صدر فنانس کمیٹی و نائب امیر جماعت اسلامی لاہور ملک شاہد اسلم، سیکرٹری فنانس کمیٹی و ڈپٹی سیکرٹری جماعت اسلامی لاہورعمر شہباز، ممبر فنانس کمیٹی و نائب امیر جماعت اسلامی لاہور اظہر بلال، ممبر فنانس کمیٹی و صدر الخدمت فاؤنڈیشن لاہور عبدالعزیز عابد، ممبر فنانس کمیٹی جماعت اسلامی لاہور معروف چارٹر اکاونٹنٹ مرزا منور حسین، شریف الحق اور دیگر عہدیداران نے شرکت کی۔ ڈاکٹرذکر اللہ مجاہد نے کہا کہ لوگوں کی طرف سے رفاع عامہ اور خدمت کے لیے دیئے گئے وسائل کو پوری ذمہ داری کے ساتھ حق داروں تک پہنچایا جاتا ہے۔ گذشتہ 80 سالوں میں بے ضبطگی یا کرپشن کے حوالے سے کوئی مخالف بھی جماعت اسلامی کے مالیات پر انگلی نہیں اٹھا سکتا۔ اگر ملک کا اقتدار ملا تو اسی جذبے اور امانت و دیانت کے مالیاتی نظام کو پورے ملک میں نافذ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں وسائل کی کمی نہیں بلکہ امانت و دیانت کا فقدان ہے۔ بدیانت اور اپنی پیٹ پوجا کرنے والے حکمران لوگوں کی کیا خدمت کریں گے۔ لوٹ مار اور کرپشن کی سیاست نے پاکستان کا بیٹرا غرق کردیا ہے۔ ہر آنے والا حکمران گذشتہ حکومتوں کے بدیانت اور کرپٹ لوگوں کا ٹولہ اپنے اردگرد جمع کرلیتا ہے۔ ملک کے گلے سٹرے اور گندے معاشی نظام اور معاشرت کو تبدیل کیے بغیر کوئی تبدیلی اور خوشحالی نہیں آسکتی۔ ڈاکٹرذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ تبدیلی کے نام نہاد دعویدار حکمرانوں کی کارکردگی پوری قوم کے سامنے ہے۔ حکومت کی طرف پیش کردہ موجودہ بجٹ پر ڈاکٹرذکر اللہ مجاہد نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ آئی ایم ایف اور عالمی بنک کی ڈیکٹیشن پر بننے والا قومی بجٹ لوگوں کو کون سی خوشحالی اور ریلیف فراہم کرسکتا ہے جبکہ موجودہ بجٹ کا ایک بہت بڑا حصہ سود کی ادائیگی کی مدد میں خراچ ہوجائے گا اور اس بجٹ سے ملکی مسائل کو کیسے حل کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی اقتدار میں آکر سودی نظام معیشت کو ختم کرے گی۔
 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس