Jamaat-e-Islami Pakistan |

اہم خبریں

حکومت اور قومی قیادت کو ملک کی بقاءکے لیے اپنی اپنی انا کے خول سے باہر نکلنا ہوگا،سینیٹر سراج الحق


لاہور31مارچ2020ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت اور قومی قیادت کو ملک کی بقاءکے لیے اپنی اپنی انا کے خول سے باہر نکلنا ہوگا۔حالات کا تقاضا ہے کہ وزیراعظم اور اپوزیشن مل بیٹھ کر مشاورت کریں اور کورونا وباءسے نجات کے لیے مشترکہ حکمت عملی اور لائحہ عمل بنایا جائے۔چین سے ملنے والے ریلیف کے سامان میں گلگت بلتستان کے عوام وفاقی حکومت کی خصوصی توجہ او ر تعاون کے مستحق ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے نے منصورہ سے ویڈیو لنک کے ذریعے صوبائی امراءکے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ حکومت نے ابھی تک باہر سے ملنے والی امداد اور کرونا کے خلاف وفاقی حکومت کے اقدامات پر اپوزیشن کو آن بورڈ نہیں لیا۔حکومت کا فرض تھا کہ وہ قومی قیادت اور سٹیک ہولڈرز کو ایک میز پر بٹھاتی اور وسیع تر مشاورت کا اہتمام کرتی تاکہ کورونا وائر س کے خلاف ایک مشترکہ پالیسی کے تحت تمام اقدامات اٹھائے جاتے۔انہوں نے امرائے صوبہ کو ہدایت کی کہ اپنے متعلقہ صوبوں میں ریلیف کی سرگرمیوں کو منظم کریں تاکہ کوئی غریب اور مستحق راشن اور بیماری سے بچاﺅ کے لیے ضروری سامان سے محروم نہ رہے۔انہوں نے کہا کہ خاص طور پر شہروں کی نواحی بستیوں اور دیہاتوں کو ہدف بنا کرمکمل منصوبہ بندی کے ساتھ ضرورت مندوں کے پاس پہنچا جائے۔
سینیٹر سراج الحق نے کہ جماعت اسلامی اورالخدمت فاﺅنڈیشن اپنے وسیع تر نیٹ ورک کی بنیاد پر قوم کی امنگوں اور امیدوں کا مرکز ہے اس لیے ضروری ہے کہ عوام کی امیدوں پر پورا اتراجائے اورحکومت کی طرف سے عدم توجہی کے شکار لوگوں کو محرومی اور ناامیدی کے اندھیروں سے نجات دلائی جائے۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی اور الخدمت فاﺅنڈیشن نے اب تک پانچ لاکھ سے زائد گھرانوں میں راشن پہنچایا اور ملک بھر میں لاکھوں عوام کو کورونا سے محفوظ رکھنے کے لیے سینی ٹائزر ،ماسک اور دیگر ضروری سامان مہیا کیا۔جماعت اسلامی ریلیف کی سرگرمیوں پر اب تک 43کروڑ پچاس لاکھ روپے سے زائد رقم خرچ کرچکی ہے۔
 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس