Jamaat-e-Islami Pakistan |

اہم خبریں

عوام کو مساجد، خانقاہوں اور مزارات سے دور رکھنا ہی حکومت کی ترجیح نہیں بن جانی چاہیے ۔لیاقت بلوچ


لاہور29مارچ2020ء:نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اور ملی یکجہتی کونسل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے اپنے بیان میں کہاہے کہ کورونا وبا پاکستان میں بڑھ رہی ہے ۔ احتیاطی تدابیر کا زیادہ تر خیال رکھا جارہاہے لیکن ہسپتالوں میں سہولتیں نہیں ۔ کورونا وائرس لیبارٹریز ٹیسٹ بہت ہی دشوار ہے ۔ معمول کی بیماری کے علاج کے لیے بھی بڑی مشکلات پیدا ہو گئی ہیں ۔ حقیقت یہ ہے کہ ملک بھر میں منظم ، ہمہ گیر ، عوام دوست ہیلتھ ایمر جنسی نظام نہیں ہے عوام در بدر ہوگئے ہیں ۔ 

لیاقت بلوچ نے کہاکہ سندھ حکومت نے کورونا بچاﺅ کے لیے بروقت انتظامات کیے اور اپنا کردار ادا کیاہے دیگر صوبے تاخیر سے فعال ہوئے لیکن وفاقی حکومت ابھی بھی واضح دوٹوک فیصلوں کے راستہ پر نہیں آسکی ۔ لاک ڈاﺅن ، صوبوں سے کوآرڈی نیشن ، پارلیمنٹ ، سیاسی ، جمہوری ، دینی قیادت کے ساتھ مل کر متفقہ قومی لائحہ عمل بنانے میں حکومت ناکام ہے ۔اسلامی جمہوری پاکستان میں حکومت کی ترجیح صرف اور صرف عوام کو مساجد، خانقاہوں اور مزارات سے دور رکھنے کی ہی ترجیح نہیں بن جانی چاہیے ۔ انہوںنے کہاکہ علماء، مشائخ ، مفتیان کرام اور دینی قیادت نے مثبت اور تعمیری کردارادا کیاہے ۔ 

لیاقت بلوچ نے کہاکہ دنیا بھر کے پسماندہ ، غریب اور ترقی پذیر ممالک کا معاشی نظام کورونا وبا کا طویل جھٹکا برداشت نہیں کر سکتا ۔ عالمی اقتصادی قوتوں اور اداروں کو قرضے معافی اور اقتصادی ریلیف کا ہمہ گیر ٹھوس اقدام کرلینا چاہیے ۔ ایٹم بم ، توپ و تفنگ کے مقابلہ میں و ینٹی لیٹر زیادہ اہم بن گیاہے ۔ جنگیں نہیں دنیا کو علم و تحقیق اور مضبوط سماجی رابطوں کی ضرورت ہے ۔ مالک کائنات کی طرف لوٹ آ نا ہی مسائل کا حل ہے ۔ معاشی ناانصافی اور ظلم و ستم کی شکار اقوام کو آزادی اور حق خود ارادیت ملنا چاہیے ۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس