Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

وزیراعظم کا دو افراد پر مشتمل گھرانہ دو لاکھ میں گزارا نہیں کر سکتا تو سولہ سترہ ہزار لینے والا مزدور کیسے گزارا کر سکتا ہے،سینیٹر سراج الحق


 


لاہور 3فروری2020ء
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ وزیراعظم کا دو افراد پر مشتمل گھرانہ اگر دو لاکھ میں گزارا نہیں کر سکتا تو سولہ سترہ ہزار لینے والا مزدور جس کے خاندان کے سات، آٹھ افراد ہیں، وہ کیسے گزارا کر سکتا ہے۔ پارلیمنٹیرینز اپنی تنخواہوں میں گزارا کرنا سیکھیں۔ ا س سے اللہ تعالیٰ خوش ہو گااور دنیا میں عزت دے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سینیٹ اجلاس میں خطاب اور پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔
سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ سب سے بڑا مسئلہ وہ کروڑ اور ارب پتی ہیں جن کی زندگیاں شاہانہ انداز میں گزر رہی ہیں۔ پانامہ کے 436 ملزموں میں کسی چوکیدار، کسان اور مزدور کا نام نہیں، یہ سب نامی گرامی لوگ ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں تمام فیصلے ان بڑے بڑے لوگو ں کے مفاد میں ہوتے ہیں جنہوں نے جائز و ناجائز طریقے سے دولت کے انبار لگارکھے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں خوشی ہے کہ موجودہ حکومت نے پاکستا ن کو مدینہ کی طرز پر اسلامی ریاست بنانے کا اعلان کیا اس اعلان کے مطابق انہیں سب سے پہلے خود نمونہ بننا چاہیے تھا مگر حکمران اٹھارہ ماہ میں عوام کو اپنے کسی ایک فیصلے سے بھی مطمئن نہیں کر سکے۔ عوام جب اپنے حکمرانوں اور افسروں کی موجیں دیکھتے ہیں تو ان کے زخم تازہ ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ٹیکسوں کے ظالمانہ نظام کی وجہ سے ایک ارب پتی بھی وہی ٹیکس دیتاہے جو ایک مزدور اور جھونپڑی میں کسمپرسی کی زندگی گزارنے والا دے رہاہے۔ امیروں کے بنگلوں اور کارخانوں میں اضافہ ہورہاہے جبکہ غریب فاقہ کشی پر مجبور ہو چکاہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ ظلم کا نظام زیادہ دیر چل نہیں سکتا اگر جھونپڑیوں میں رہنے والے بھوکےعوام نے ان عالی شان بنگلوں اور محلوں کا گھیراؤ کر لیا تو ان اربوں کھربوں پتی حکمرانوں کو کہیں پناہ نہیں مل سکے گی اس لیے بہتر یہی ہے کہ بھوک سے نڈھال عوام کا بھی خیال کیا جائے۔

 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس