Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

ایک سال میں تیرہ سو افراد کا خودکشی کرنا سندھ حکومت کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔کاشف شیخ


کراچی 11 جنوری2020 جماعت اسلامی سندھ کے جنرل سیکریٹری کاشف سعید شیخ نے سندھ میں خودکشیوں کی بڑھتی ہوئی تعداد پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ صوبہ جو معدنی اور زرعی وسائل سے مالا مال ہے، تیل،گیس، کوئلے اور زراعت میں خودکفیل صوبے میں ایک سال میں 1300افراد کا بھوک، بدحالی،بیروزگاری اور معاشی ابتری کی وجہ سے خودکشی کرلینا سندھ حکومت اور پیپلزپارٹی کی قیادت کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔ انہوں نے آج ایک بیان میں کہا کہ سندھ صوبہ جو پاکستان کا سب سے امیر صوبہ ہے جس میں ہر قسم کے معدنی وسائل وافر مقدار میں موجود جبکہ بہترین نہری نظام اور سونا اگلتی ہوئی زمینوں کی بدولت ہرموسم کے فصل پیدا ہوتے ہیں اس صوبے میں غربت اور بدحالی کی وجہ سے بڑے پیمانے پر لوگوں کا اپنا اور بچوں کا پیٹ نہ بھرنے کی وجہ سے جانوں کا نذرانہ پیش کرنا عوامی حکومت کے دعویدار پیپلزپارٹی اور عوام طاقت کا سرچشمہ ہیں کا نعرہ لگانے والے بھٹو کی پارٹی کیلئے لمحہ فکریہ ہے، خودکشی کرنے والے لوگوں کی اکثریت ضلع تھرپارکر سے ہے جہاں پر کوئلے کے وسیع ذخائر دریافت ہوئے اور بجلی گھر تعمیر ہوچکے ہیں ،پیپلزپارٹی کی حکومت بار بار یہ دعوے کرتی رہی ہے کہ تھر کو لندن بنادیں گے لیکن ایک طرف غربت اور افلاس کے مارے ہوئے لوگ آئے روز خوکشیاں کررہے ہیں تو دوسری جانب ہزاروں کی تعداد میں معصوم بچے مناسب علاج معالجہ اور خوراک کی سہولیات نہ ملنے کی وجہ سے موت کی آغوش میں پناہ لے رہے ہیں، انصاف اور عدل کے علمبردار خلیفہ دوم حضرت عمر ؓ نے فرمایا تھا کہ ”دریائے فرات کے کنارے ایک کتا بھی بھوک سے مرگیا تو آخرت کے دن عمرؓ اس کا ذمہ دار ہوگا“ لیکن سندھ پر گذشتہ 12سالوں سے حکمرانی کرنے والی پیپلزپارٹی کے دور میں ہزاروں لوگ خودکشیاں کرکے موت کے منہ میں چلے گئے اور حکمرانوں کے ماتھے پر شکن بھی نمودار نہیں ہوئی جو ان کی بے حسی کی شاندار مثال ہے۔جماعت اسلامی رہنماءنے مطالبہ کیا کہ مرکزی حکومت پر تنقید کرنے کا حق بجا لیکن سندھ حکومت صوبے کے عوام کو بھوک ،بدحالی اور غربت سے نجات دلانے کیلئے ٹھوس حکمت عملی مرتب، روزگار، صحت، تعلیم جیسی بنیادی انسانی سہولیات فراہم کرنے کیلئے فوری اور مو ¿ثر اقدامات کرے تاکہ عوام سکھ کا سانس اور جینے کی تمنا پیدا ہوسکے اور لوگ خودکشیاں کرکے اپنی جان اور خاندانوں کیلئے دکھ اور تکلیف کا باعث نہ بن سکیں جبکہ مخیر حضرات ،سماجی وفلاحی تنظیموں کو بھی آگے بڑھ کر غربت،مہنگائی اور مفلسی کے ستائے ہوئے لوگوں کی مدد کرنی چاہئے تاکہ لوگ اپنی جانوں سے کھلواڑ نہ کرسکیں ۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس