Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

قرآن پوری انسانیت کے لئے مشعل راہ ہے ،قرآن کے نظام کو نافذ کئے بغیردنیا میں امن کاقیام ممکن نہیں۔ڈاکٹرفریداحمدپراچہ


فیصل آباد8 /ستمبر2019ء: جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر ڈاکٹرفریداحمدپراچہ پی پی 115کے زیراہتمام ہونے والی آٹھ روزہ قرآن کلاس کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ قرآن کے نظام کو نافذ کئے بغیردنیا میں امن کاقیام ممکن نہیں،قرآن پوری انسانیت کے لئے مشعل راہ ہے جس پر عمل پیراہوکر ہم مسائل سے چھٹکار حاصل کرسکتے ہیں،بیرونی دشمن سے لڑنے کے لیے اپنی صفوں میں اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے ۔کشمیر کے معاملے پر ہمیں حضرت امام حسین علیہ اسلام اور واقعہ کربلا کو رول ماڈل بنانا ہو گا ۔ محرم الحرام کا مہینہ ہمیں اتحاد اور عظیم مقصد کے لئے قربانی کا درس دیتا ہے، مختلف مکتبہ فکر کے علماء کرام ملک میں اتحاد بالخصوص محرم الحرام کے مہینے کے دوران بین المذاہب اور بین الفرقہ ہم آہنگی کو فروغ دیں۔معروف سکالرپروفیسرڈاکٹراخترحسین عزمی نے آٹھ روز تک قرآن کلاس میں قرآن مجیدکے مختلف آیات کی تفیسربیان،اختتامی روز جماعت اسلامی پی پی 115کے امیر میاں اجمل حسین بدر،جنرل سیکرٹری یوسف گل پراچہ نے بھی خطاب کیا۔جبکہ اس موقع پر جماعت اسلامی کے ضلعی امیر انجینئرمحمدعظیم رندھاوا،نائب امیرشیخ مشتاق احمد،انجم اقبال بٹ،ڈاکٹرمحمدصدیق،میاں عبدالستاربیگا،عثمان انور،غلام محمدعطا،رائے مجیب الرحمن بھٹی،شیخ افضال شاہین، میاںظہورالہیٰ،راوشیرافگن، عمر پراچہ،چاندزیب،طارق سرور اوردیگرراہنما بھی موجودتھے۔فریداحمدپراچہ نے کہاکہ محرم کا مہینہ ہے اور کشمیر کو کربلا بنا دیا گیا ہے۔ یہ صرف محاورے کے طور پر نہیں، حقیقت میں کشمیر کو کربلا بنا دیا گیا ہے۔ پہلے ہی کشمیری ظلم و ستم کا شکار ہیں۔ مودی نے انتہا کر دی ہے۔شمیریوں کے لیے سوچنے والے حسینی جذبے سے مالا مال ہونگے تو پھر بھارت تو کیا کوئی غیر مسلم طاقت بھی مقابلے میں کھڑی نہیں ہو سکے گی۔ نریندرا مودی نے حقیقی معنوں میں یزیدی ظلم و ستم کی یاد تازہ کر دی ہے۔ یزید نام کا مسلمان تھا۔ کوئی غیر مسلم بھی ظلم کی انتہا کر کے یزید کا خطاب پا سکتا ہے۔نریندرا مودی نے کشمیریوں پر بالکل کربلا کی طرح کشمیر میں صورتحال پیدا کی ہے یہاں بھی خواتین و حضرات کو گھروں میں محصور کر دیا گیا ہے گویا اس نے ہر گھر کربلا بنا دیا ہے۔ یہ یزید کے ظلم سے بھی بڑا ظلم ہے۔ یہ ظلم عظیم ہے۔ گھر والوں کو گھروں میں قید کر دیا گیا ہے نہ کوئی باہر آ سکتا ہے نہ کوئی اندر جا سکتا ہے۔ گھر جیل اور حوالات کا منظر پیش کر رہے ہیں۔ اوپر سے ظلم و ستم بھی جاری ہے۔ ہر طرف کرفیو طاری ہے اور بھارتی اہلکار بندوقیں تانے ہوئے گھوم رہے ہیں۔ ان کی گولیوں کا نشانہ صرف اور صرف کشمیری مسلمان ہیں۔یہ ظلم بھی کشمیریوں کے جذبے کو کم نہ کر سکے گا۔ اس طرح مودی پوری دنیا میں بدنام ہوا ہے۔ یہ انوکھی خبر دنیا والوں نے سُنی ہے کہ پورے شہر کے لوگوں کو مقید کر دیا گیا ہے، اس سے ایک پیغام تو د نیا والوں کو گیا ہے کہ سارے کشمیر کو ایک قید خانہ بنا دیا گیا ہے۔ ہر گھر ایک حوالات بن گئی اور یہ بھی ثابت ہو گیا ہے کہ کشمیر پر بھارتی قبضہ ہے۔ وہ بھارت کا کوئی آزاد شہر نہیں ہے۔ بندوقوں والے اہلکار جس طرح شہر میں سیر سپاٹا کر رہے ہیں ان اہلکاروں کے علاوہ کوئی کشمیری انسان سڑکوں پر نہیں ہے۔ سڑکوں پر صرف کرفیو ہے بندوقوں کا رُخ صرف انسانوں کی طرف ہے۔ابھی تو پاکستان کی طرف سے کسی مداخلت کا اندیشہ نہیں ہے اور کشمیر کو جنت نظیر وادی کا یہ حال ہے۔ کشمیر کی کئی سیاحوں مسافروں اور لوگوں نے جنت کہا۔ اسے بھارتی حکمرانوں اور خاص طور پر نریندرا مودی نے جہنم بنا دیا ہے۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس