Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

سانحہ طاہر پلازہ کے’’ نفیس قاتلوں ‘‘کو سزا کب ملے گی ؟ ۔حافظ نعیم الرحمن


 کراچی ؍09اپریل 2019ء:امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن سے ادارہ نور حق میں وکلاء کے وفود نے 9اپریل 2008میں طاہر پلازہ میں وکلاء کو زندہ جلائے جانے والے افسوسناک واقعہ اور سانحے کے حوالے سے بات چیت کی حافظ نعیم الرحمن نے اُن سے گفتگو کرتے ہوئے حکومت اور متعلقہ اداروں سے استفسار کیا کہ سانحہ طاہر پلازہ کے نفیس قاتلوں کو سزا کب ملے گی ؟ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ یہ بات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے کہ سانحہ طاہر پلازہ ، سانحہ12مئی اور سانحہ بلدیہ ٹاؤن فیکٹری میں کون ملوث رہا ہے ۔ سینکڑوں افراد کے قتل کی ذمہ داری کس گروہ پر عائد ہو ئی ہے ۔خود وزیر اعظم بھی اس حوالے سے ماضی میں جن خیالات اور موقف کا اظہار کرتے رہے ہیں وہ بھی سب کے سامنے ہے لیکن آج وہی ان لوگوں کو اپنی کابینہ میں سب سے زیادہ نفیس قرار دے رہے ہیں ۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ دہشت گردی اور قتل و غارت گری میں ملوث دہشت گرد بڑی تعداد میں گرفتار ہوئے ۔ ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو سے اسلحہ بر آمد ہوا قتل کی وارداتوں میں ملوث دہشت گرد گرفتار ہوئے لیکن آج تک کسی قاتل اور دہشت گرد کو سزا نہیں ملی ۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ آج سانحہ طاہر پلازہ میں زندہ جلانے والے وکلا کا خون انصاف مانگ رہا ہے لیکن ایسا محسوس ہوتا ہے کہ جس طرح سانحہ 12مئی میں تقریباً 50 افراد اور سانحہ بلدیہ فیکٹری میں زندہ جلنے والے 259مزدوروں کا خون بھلا دیا گیا ہے اور اسی طرح سانحہ طاہر پلازہ کوبھی فراموش کر دیا جائے گا اور دہشت گردی اور قتل وغارت گری میں ملوث افراد اور گروہ قانون کی گرفت میں نہیں آسکیں گے لیکن اگر ایسا ہوا تو شہداء کے لواحقین اور عوام حکمران ٹولے اور حکومت میں رہنے والوں کو کبھی معاف نہیں کریں گے ۔موجودہ حکومت اپنے اقتدار کے تحفظ اور بقاء کے لیے شہداء کے لہو سے منہ موڑنے کے بجائے سینکڑوں خاندانوں کو انصاف کی فراہمی یقینی بنائیں ۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس