Jamaat-e-Islami Pakistan |

دفعہ۔۔۔61تا 70 ۔۔ قیم حلقہ،تنظیمی اضلاع، امیر ضلع


دفعہ 61:حلقے کی مجلسِ شوریٰ کے معمولی اجلاس سال میں دو مرتبہ ہوا کریں گے۔
دفعہ 62:
اجلاس:- حلقے کی مجلسِ شوریٰ کا غیر معمولی اجلاس حسب ذیل صورتوں میں ہر وقت بلایا جاسکے گا:
(ا)  امیر حلقہ اس کی ضرورت محسوس کرے۔
(ب) حلقہ کی مجلس شوریٰ کے کم ازکم ایک چوتھائی ارکان اس کاتحریری مطالبہ کریں تو مجلس شوریٰ کااجلاس 20روز کے اندر منعقد ہونالازمی ہوگا۔
(ج) امیر حلقہ کے موجود نہ ہونے کی صورت میں حلقے کا شعبہ تنظیم اس کی ضرورت محسوس کرے۔
(د)  امرائے بالا اسے منعقد کرنے کا حکم دیں۔
دفعہ63: فرائض واختیارات:- حلقے کی مجلسِ شوریٰ کے فرائض وہ ہوںگے جو رکنیت شوریٰ کے حلف میں مذکور ہیں اور اس مجلس کے اختیارات حسب ذیل ہوںگے:
(۱)    جماعت کے نصبُ العین اور مقاصد سے متعلق اور ان پر اثر انداز ہونے والے مسائل پر قراردادوں یا بیانات کی شکل میں اظہار رائے بشرطیکہ وہ بالائی نظام کی عام یا خاص پالیسی کے خلاف نہ ہو۔
(۲)اپنے حلقے اور ماتحت جماعتوں کے کام کا محاسبہ۔
(۳)حلقے کے بجٹ کی منظوری۔
(۴)امیر حلقہ پر اعتماد اور عدم اعتماد کی قرار داد منظور کرنا۔


۴۔ قیّمِ حلقہ
(Divisional Secretary)


دفعہ64:تقرر اور برطرفی:-  قیّم حلقہ کا تقرر امیر حلقہ اپنی مجلس ِ شوریٰ کے مشورے سے کرے گا اور وہ اسی وقت تک اس منصب پر قائم رہ سکے گا جب تک کہ امیر حلقہ اس کے کام سے مطمئن رہے۔
       
دفعہ 65:فرائض:-  (۱) قیّم حلقہ اپنے حلقے کے جملہ معاملات میں امیر حلقہ کا مددگار اور نمائندہ ہوگا اور وہ فرائض انجام دے گا جو امیر حلقہ اس کے سپرد کرے اور اپنے کام کے لیے امیر حلقہ کے سامنے جواب دہ ہو گا۔
(۲)قیّمِ حلقہ اپنے عہدے کی ذمہ داریاں سنبھالنے سے پہلے امیر حلقہ کے سامنے وہ حلف اٹھائے گا جو اس دستور کے ضمیمہ نمبر۳ میں درج ہے۔



تنظیمی اضلاع
۱۔حدود اور نظام

   
دفعہ 66:ضلعی نظام :- (۱)جماعتی تنظیم کے لیے تنظیمی اضلاع کے حدود صوبائی امیر اپنی مجلس ِ شوریٰ کے مشورے سے مقرر کرے گا۔
(۲)ضلعی نظام امیر ضلع‘ ضلعی مجلسِ شوریٰ اور قیّم ضلع پر مشتمل ہوگا۔ الاّیہ کہ مقامی حالات عارضی طور پر کسی دوسرے انتظام کے متقاضی ہوں۔
(۳)ضلعی نظام نظم ِ حلقہ کے تابع ہوگا اور اس کے واسطے سے نظم بالا سے تعلق رکھے گا۔
(۴)ہر ضلع کے ارکان پر نظمِ ضلع کی اطاعت لازم ہوگی۔


۲۔ امیر ضلع
(District Ameer)

  
دفعہ 67: حیثیت:- ہر تنظیمی ضلع کا ذمہ دار ایک امیر ہوگا جو امیر ضلع کہلائے گا اس کی حیثیت اپنے ضلع میں امیر جماعت کے نمائندے کی ہوگی اور وہ اپنے امرائے بالا کے سامنے جوابدہ ہوگا۔
   
دفعہ 68:عزل و نصب:- امیر ضلع کا عزل و نصب امیر جماعت‘ صوبائی امیر اور امیر حلقہ کے مشورے سے کرے گا اور اس میں جماعتی مصالح کے ساتھ ارکان ضلع کی رائے کو بھی زیادہ سے زیادہ ملحوظ رکھا جائے گا۔ امیر ضلع کا تقرر دو سال کے لیے ہوگا۔
       
دفعہ69:حلف:- امیر ضلع اپنے منصب کی ذمہ داری سنبھالنے سے پہلے امیرصوبہ یا اس کے مقرر کردہ شخص یا اشخاص کے روبرو حلف ِ امارت اٹھائے گا جو اس دستور کے ضمیمہ نمبر۱ میں درج ہے۔
      
دفعہ ۷۰:فرائض و اختیارات :- امیر ضلع اپنے ضلع میں پورے جماعتی نظم کا ذمہ دار ہوگا اور اس کے فرائض اور اختیارات اپنے ضلع میں بنیادی طور پر وہی ہوں گے جو امیر حلقہ کے حلقہ میں ہیں۔ (دفعہ ۵۶۔ ۵۷)

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں




سوشل میڈیا لنکس