Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

دفعہ۔۔۔8 (فرائض رکنیت)


داخلہ جماعت کے بعد جو تغیرات ہر رکن کو بتدریج اپنی زندگی میں کرنے ہوں گے وہ یہ ہیں:

۱۔ دین کا کم از کم اتنا علم حاصل کرلینا کہ اسلام اور جاہلیت(غیر اسلام) کا فرق معلو م ہو اور حدود اللہ سے واقفیت ہوجائے۔

2۔ تمام معاملات میں اپنے نقطہِ نظر، خیال اور عمل کو کتاب وسنت کی تعلیمات کے مطابق ڈھالنا، اپنی زندگی کے مقصد، اپنی پسند اور قدر کے معیار اور اپنی وفاداریوں کے محور کو تبدیل کرکے رضائے الٰہی کے موافق بنانا اور اپنی خود سری اور نفس پرستی کے بت کو توڑ کر تابع امرِ رب بن جانا۔

3۔ ان تمام رسومِ جاہلیت سے اپنی زندگی کو پاک کرنا جو کتاب اللہ اور سنتِ رسول اللہ کے خلا ف ہوں اور اپنے ظاہر وباطن کواحکامِ شریعت کے مطابق بنانے کی زیادہ سے زیادہ کوشش کرنا۔

4۔ ان تعصبات اور دلچسپیوں سے اپنے قلب کو، اور ان مشاغل اور جھگڑوں اور بحثوں سے اپنی زندگی کو پاک کرنا جن کی بنا نفسانیت یا دنیا پرستی پرہو اور جن کی کوئی اور اہمیت دین میں نہ ہو۔

5۔ فساق و فجار اور خدا سے غافل لوگوں سے موالات اور مودت کے تعلقات منقطع کرنا اور صالحین سے ربط قائم کرنا۔

6۔ اپنے معاملات کو راستی، عدل، خداترسی اور بے لاگ حق پرستی پر قائم کرنا۔

اپنی دوڑ دھوپ اورسعی و جہدکو اقامت دین کے نصب العین پر مرتکز کردینا اور اپنی زندگی کی حقیقی ضرورتوں کے سوا ان تمام مصروفیتوں سے دست کش ہوجانا جو اس نصب العین کی طرف نہ لے جاتی ہوں۔

تشریح: ضروری نہیں کہ یہ تغیرات تمام اشخاص میں کمال درجے پر ہوں، مگر ہر شخص کو اس باب میں اپنی تکمیل کی کوشش کرنی ہوگی کیونکہ انہی تغیرات کے اعتبار سے ناقص یا کامل ہونے پر ”جماعت اسلامی “ میں ہر آدمی کے مرتبے کا تعین ہوگا۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس