بلدیاتی انتخابات کے لیے جماعت اسلامی کے امیدواران بھر پور عوامی رابطہ کا آغاز کردیں،لیاقت بلوچ

نائب امیر جماعت اسلامی اور سیاسی انتخابی امور کمیٹی کے صدر لیاقت بلوچ نے لاہور میں سیاسی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت کی ناکامی ، نااہلی اور تکبر و غرور کے خلاف عوامی احتجاج اور مظاہروں کی ہوائیں چل پڑی ہیں ۔عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں ، بے روزگاری سماجی نظام کو تباہ و برباد کر رہی ہے ۔اسلام آباد ، لاہور ، کراچی ، کوئٹہ ، پشاور عوامی احتجاج کے مراکز بن گئے ہیں ۔ وفاقی اور صوبائی حکومتیں اپنی رٹ کھو چکی ہیں ۔ اسلام آباد میں لیڈی ہیلتھ ورکرز کا دس نکاتی احتجاجی مظاہرہ حکومتوں کے ماتھے پر کلنک کا ٹیکہ ہے۔ خواتین کی کوئی شنوائی نہیں ۔ عمران خان حکومتی ناکامیوں کے خلاف عوامی ردعمل کے مقابلہ میں اپنی اصلاح کرنے کی بجائے ہوشمندی کو چھوڑ کر حالات کو پوائنٹ آف نو ریٹرن کی طرف لے گئے ہیں ۔ ریاستی ادارے اور اسٹیبلشمنٹ اپنے آپ کو غیر جانبدار اور آئینی حدود میں رہنے کا کردار اختیار کریں تو حالات سدھر جائیں گے ۔حکومت اپنی اصلاح کرے گی یا سب نئے انتخابات پر اتفاق کر لیں گے ۔
لیاقت بلوچ نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات کے لیے جماعت اسلامی کے امیدواران بھر پور عوامی رابطہ کا آغاز کردیں ۔ گھر گھر جا کر عوام کو حوصلہ دیں ۔ رائے عامہ کو حق کے پلڑے میں وزن ڈالنے کے لیے تیار کریں ۔ جماعت اسلامی کی مہنگائی ،بے روزگاری، سود کے خلاف تحریک شروع ہوگئی ہے ۔ پہلے مرحلے پر ضلعی ، تحصیل ہیڈ کوارٹرز پر جلسے ، کنونشن منعقد ہوں گے ۔ جماعت اسلامی کی تنظیمیں اور قائدین عوامی مسائل کے حل کے لیے بھر پور آواز اٹھائیں ۔ ملک میں سیاسی قومی بحران کے خاتمہ کے لیے شفاف غیر جانبدارانہ انتخابات ناگزیر ہیں ۔ اسٹیبلشمنٹ سیاسی انتخابی دائروں میں مداخلت ختم کرے ۔ جماعت اسلامی کی تحریک ذاتی، گروہی، پارٹی مفادات کے لیے نہیں، عوامی اور قومی مفادات کے تحفظ کے لیے ہے ۔ سیاسی کونسل کے اجلاس سے خالد احمد بٹ ، احمد سلمان بلوچ ، احسان چوہدری ، محسن بشیر نے بھی خطاب کیا ۔

-->