Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

قرارداد۔۔برائے مزدورمسائل


جماعت اسلامی پاکستان کی مجلس شوریٰ کا اجلاس منعقدہ 23دسمبرتا 25دسمبرمیں محنت کشوں کے مسائل پر قرارداد منظور کی جس میں کہا گیا:-
٭ پاکستان اسٹیل ملز ملک کا بڑا صنعتی ادارہ ہے جس نے ملک کی ترقی میں اہم کرداراداکیالیکن گزشتہ کئی سالوں سے وفاقی حکومت کی جانب سے اس اہم صنعتی ادارے کی نجکاری کے اعلان کے بعد عملاً اس ادارے کی پیداوار کو بند کر دیا گیا جو تباہی کی جانب حکومت کا طے شدہ اقدام معلوم ہوتاہے۔ ظلم یہ ہے کہ حاضر سروس ملازمین کو کئی ماہ سے تنخواہیں ادا نہیں کی جارہی ہیں۔ حکومت کو چاہیے تھا کہ اسٹیل ملز کی بحالی کے لئے موثر منصوبہ بندی کرتی، دیانت دار باصلاحیت چیف ایگزیکٹوکو مقرر کیاجاتا اور تمام یونینز کو اعتماد میں لے کر اسٹیل ملز کو منافع بخش ادارہ بنانے کی کوشش کی جاتی اور یہ ممکن تھا لیکن دانستہ ایسا نہیں کیاگیا۔ سی پیک منصوبہ کی وجہ سے پاکستان اسٹیل ملز کی اہمیت اور بڑھ گئی ہے۔ مجلس شوریٰ کا اجلاس پاکستان اسٹیل ملز کی موجودہ صورتحال پر گہری تشویش کااظہار کرتے ہوئے مطالبہ کرتا ہے کہ:
i) ہنگامی بنیادوں پرپاکستان اسٹیل ملز کے پیداواری عمل کو فوری طور پر شروع کیاجائے۔
ii)اسٹیل ملز کو فروخت کرنے کے بجائے اسے بحال کرنے کے اقدامات کئے جائیں۔
iii) ملازمین کی تنخواہیں فوری طور پر اداکی جائیں۔
٭ مجلس شوریٰ کا اجلاس قومی کمیشن برائے صنعتی تعلقات(NIRC) نیشنل انڈسٹریل ریلیشن ایکٹ کے تحت ایک اہم ادارہ ہے لیکنNIRCپر سیاسی اثرورسوخ کی وجہ سے اس ادارے کی ساکھ بری طرح متاثر ہوئی ہے اور قانون واصول کے بجائے سیاسی بنیادوں پر فیصلے کئے جارہے ہیں۔ واپڈا، بجلی پیدا کرنے والی کمپنیوں میں قانون کے مطابق ریفرنڈم کو الجھا دیا گیاہے۔ ریلوے پریم یونین اوپن لائن کے انٹرنل الیکشن جو اعلیٰ عدالت کے فیصلے کے مطابق NIRCکی نگرانی میں منعقدہونے تھے لیکن سیاسی اثرورسوخ کی وجہ سے یہ الیکشن ابھی تک نہیں ہوسکے۔ شوریٰ مطالبہ کرتی ہے کہ NIRCکے چیئرمین اپنی نگرانی میں فوری طور پر ریفرنڈم اور الیکشن کروائیں اورNIRCسے سیاسی بالادستی کو ختم کیاجائے۔
٭ ملک کے چاروں صوبوں میں کم سے کم اجرت کا اطلاق کروایا جائے۔ صنعتی اداروں میں ٹھیکہ داری نظام کا خاتمہ کیا جائے۔ تمام محنت کشوں کو بھرتی لیٹر، EOBIپنشن کارڈ جاری کئے جائیں اور سوشل سیکورٹی میں شامل کیاجائے۔
٭ ورکرویلفیئرفنڈ اسلام آباد کے پاس اربوں روپے موجود ہونے کے باوجود چاروں صوبوں کے محنت کش گذشتہ کئی سالوں سے جہیز گرانٹ، ڈیتھ گرانٹ اور اسکالر شپ گرانٹ سے محروم ہیں جو کہ انتہائی افسوس ناک ہے۔ وفاقی حکومت سے مطالبہ ہے کہ ورکرز ویلفیئرفنڈ سے محنت کشوں کی تمام مراعات کو فوری طورپر بحال کیاجائے۔
٭ EOBIکی ،کی گئی کرپشن کی تحقیقات جلد مکمل کی جائے، ملوث افرد کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔
٭ سوشل سیکورٹی میں ٹھیکیداری نظام کے تحت اور گھریلوملازمین کو شامل کیا جائے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں







سوشل میڈیا لنکس