Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

طلبہ قوم کا مستقبل ہیں،حکومت انہیں ناامیدی سے نکالے۔ محمد عامر


 فیصل آباد29دسمبر2016ء: اسلامی جمعیت طلبہ پنجاب کے ناظم محمدعامرنے کہاہے کہ پاکستانی قوم کومتحدرکھنے کیلئے یکساںنظام تعلیم نافذکرنا ہوگا نوجوان اور طلبہ پرامن اورخوشحال اسلامی پاکستان کیلئے اپناکردار ادا کریں گے،پاکستان میں استحصالی نظام نے زندگی اجیرن کردی ہے۔ اسلامی انقلاب ہی خوشحالی لائے گا،طلبہ ہی ملک کامستقبل ہیںلہذاانہیں وطن عزیزکی ترقی اورقوم کوناامیدی سے نکالنے میںکردارادا کرناہوگا، محب وطن لوگوںکوتمام تر تفرقات سے بالاترہوکروطن عزیزکی تعمیرمیںکرداراداکرناچاہیے۔خوشحال اسلامی پاکستان کانعرہ امیدکی کرن ثابت ہوگا ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے فیصل آبادعلاقہ شرقی میں اسلامی جمعیت طلبہ کے زیراہتمام ہونے والے ٹیلنٹ گالاکی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب میں ہونہار طلبہ میں انعامات بھی تقسیم کئے گئے جبکہ طلبہ کے درمیان تقاریر،ٹیبلو،نعت،پینٹنگ کے مقابلہ جات منعقدہوئے۔اس موقع پرطلبہ کی بہترین تعمیروکردار کے حوالے سے کیریکٹرکونسلنگ سیمیناربھی ہواجس میں اخترعباس نے طلبہ سے خطاب کیا۔ناظم ڈویژن حافظ باسم سعیدنے کہاکہ اسلامی جمعیت طلبہ امت مسلمہ کی محسن اورخیرخواہ تنظیم ہے نظریہ پاکستان،دوقومی نظریہ اورقرآن وسنت کے نظام کے غلبہ کے لئے اسلامی جمعیت طلبہ کی جدوجہدقابل فخر ہے جس نے نامساعدحالات ،چہاراطراف سے مخالف حملہ آورقوتوںکے مقابلہ میںتعلیمی محاذ اورتعلیمی اداروںمیںذہین سازی، کردارسازی اورنئی نسل کی جڑاسلام کے ساتھ جوڑے رکھنے کی ناقابل فراموش جدوجہد جاری رکھی ہوئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ حکومت ،دانشور،تعلیمی ماہرین اورپالیسی سازقوم پررحم کریںنئی نسل خوصاًطلبہ وطالبات کے لئے دوستانہ ،خیر خواہانہ اورتعمیری رویہ اختیارکریں۔قومی سطح پرخوشحال اسلامی پاکستان کے لئے ضروری ہے کہ ملک میںنظریہ پاکستان سے ہم آہنگ یکساں نظام تعلیم ،اسلامی نظام تعلیم نافذکیاجائے۔اردوکوذریعہ تعلیم بنایاجائے، علاقائی زبانوں کوترقی دی جائے،مقابلہ کے امتحانات اردومیںہوں، اساتذہ کے نظام تربیت اور نظام ملازمت کی اصلاح کی جائے اوراسے باوقار بنایاجائے،قومی تعمیرنومیں18سال کی عمرکے نوجوانوںکی اہمیت ہے۔نوجوان نسل ہمارا بہترین سرمایہ ہیں ان کی سماجی اورسیاسی تربیت کے لئے طلبہ یونیزبحال کی جائیں،فنی تعلیم پرخصوصی توجہ اوریونیورسٹیوں میںعلم وتحقیق کے لئے وافرسرمایہ فراہم کیاجائے،تعلیمی اداروںمیںداخلے میرٹ پرہوں اوراداروں کے سربراہان واساتذہ کی تقرری میرٹ پرکی جائے۔حکومتی اور سیاسی مداخلت کاخاتمہ کیاجائے،اعلیٰ اورپیشہ ورانہ تعلیم کے اداروںمیں غریب گھرانوںکے میرٹ پر آنے والے طلبہ وطالبات کے تمام اخراجات حکومت برداشت کرے،خصوصاًسرکاری سکولزمیںتمام تعلیمی سہولتیں یقینی بنائی جائیں۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس