Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

قراردادبرائے فاٹا صورتحال


80لاکھ قبائلی عوام گزشتہ 68سالوں سے آئینی ،قانونی ،جمہوری ،سیاسی اور بنیادی انسانی حقوق سے محروم چلے آرہے ہیں ۔آئین پاکستان کی دفعہ247کی روسے فاٹا کو دستوری حقوق و عمومی نظام اور عدلیہ کے دائرہ اختیار سے باہر رکھ کر عملی طور پر اس سر زمین کوبے آئین بنا دیا گیا ہے ۔رہی سہی کسر 9/11کے بعد وسیع پیمانے پر جنگ و جدل کے ماحول نے پوری کر دی ۔ڈرون حملوں ،گولہ باریوں اور بمباریوں کے نتیجے میں ہزاروں قبائلی عوام قتل ،لاکھوں بے گھر جبکہ زراعت اور معیشت کو بھی ناقابل تلافی نقصان پہنچ چکا ہے ۔اس ہمہ جہت محرومیوں کی وجہ سے فاٹا کے عوام کے اند ر بڑے پیمانے پر بے چینی اضطراب اور انتشار ایک فطری امر ہے ۔

فاٹا کے عوام آئینی ،قانونی ،سیاسی اور جمہوری حقوق کے لئے پرزور مطالبہ کرتے چلے آرہے ہیں ۔جماعت اسلامی پاکستان کے زیر اہتمام 2نومبر2015ءکو اسلام آباد میں آل پارٹی قومی کانفرنس میں قبائلی عوام کے مطالبات کی تائید میں قرار داد منظور کی گئی ۔درج بالا وجوہات کی بنا پر مجلس شوریٰ جماعت اسلامی پاکستان حکومت سے پرزور مطالبہ کرتی ہے کہ بلا تاخیرفاٹا کو صوبہ KPKکے ساتھ ملا کرPATAکی حیثیت دی جائے ۔تاکہ فاٹا کے عوام کے آئینی ،قانونی ،سیاسی اور جمہوری حقوق کا تحفظ ممکن ہو سکے ۔نیز شمالی وزیرستان ،جنوبی وزیرستان ،اورکزئی ایجنسی سے بے گھر ہونے والے لاکھوں IDPSکی اپنے گھروں کو باعزت واپسی یقینی بنائی جائے۔اس کے ساتھ ساتھ ان کے ہونے والے نقصانات کی بھی حکومت مکمل تلافی کرے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس