Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

عوام ڈٹ گئے،آج صدارتی انتخابی نتائج کا علان متوقع


قاہرہ24جون2012ء:مصر میں عوام نے فوجی کونسل کی تنبیہہ کے باوجود احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے ۔جس کے بعد توقع ہے کہ اتوار24جون کو صدارتی انتخابات کے نتائج کا اعلان کردیا جائے گا۔ مصر میں حکمران فوجی کونسل نے خبردار کیا ہے کہ کسی کو معمولات زندگی متاثر کرنے کی اجازت ہرگز نہیں دی جائے گی۔ مظاہرین صدارتی انتخابات کے نتائج میں تاخیر کے بجائے فوری اعلان کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں۔ مصر میں ہزاروں مظاہرین ملک کے فوجی حکمرانوں کی جانب سے اختیارات میں توسیع اور انتخابی نتائج میں تاخیر کے خلاف قاہرہ کے التحریر اسکوائر میں جمع ہو کر احتجاج کر رہے ہیں۔گزشتہ ہفتہ فوج نے پارلیمنٹ تحلیل کر دی تھی اور تمام سیاسی و قانونی اختیارات اپنے قبضے میں کر لیے تھے۔ عوام تاحال صدارتی انتخابات کے نتائج کا انتظار کر رہے ہیں جن میں اخوان المسلمون کے امیدوار محمد مرسی کی کامیابی یقینی ہے۔محمد مرسی کا کہنا ہے کہ نتائج کا اعلان فوری طور پر کیا جانا چاہیے۔ اخوان المسلمون کے ایک ترجمان نادر عمران نے بتایا کہ نتائج کے اعلان میں تاخیر نہیں ہونی چاہیے کیونکہ اس سے مزید کشیدگی پیدا ہو گی۔جمعہ کو مصر میں اسلامی، سیکولر اور نوجوان گروپوں نے مل کر اخوان المسلمون کی اپیل پر ملک بھر میں نماز جمعہ کے بعد احتجاج میں حصہ لیا۔ ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق التحریر اسکوائر میں نماز جمعہ کے امام نے کہا کہ محمد مرسی واضح طور پر صدارتی انتخابات کے فاتح ہیں۔جبکہ محمد مرسیٰ نے ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ وہ نتائج کو قبول کریں گے چاہے وہ کچھ بھی ہوں۔ تاہم ہم کسی کو بھی نتائج کو تبدیل نہیں کرنے دیں گے۔اخوان المسلمون نے فوجی کونسل کی جانب سے حال ہی میں آئین میں کی گئی تبدیلیوں کے خلاف آواز اٹھانے کے لیے عوام سے تحریر اسکوائر پر جمع ہونے کی اپیل کی تھی۔فوجی کونسل نے آئین میں تبدیلی کر کے تمام سیاسی و قانونی اختیارات اپنے قبضے میں کر لیے تھے۔اخوان المسلمون کا کہنا ہے کہ وہ تحریرا سکوائر پر اس وقت تک احتجاج جاری رکھیں گے جب تک نتائج کا اعلان نہیں ہو جاتا۔مبصرین کہتے ہیں کہ مصر اس وقت سیاسی اور آئینی تعطل کے دور سے گزر رہا ہے۔قاہرہ میں بی بی سی کے نامہ نگارکا کہنا ہے کہ فوجی حکام کئی عشروں سے اخوان المسلمون سے بر سرپیکار ہیں ،اس لیے اب شک اس بات پرہے کہ ان کی کامیابی کے باوجود فوجی کونسل انہیں اقتدار سونپے گی یا نہیں،ایسی بھی قیاس آرائیاں زوروں پر ہیں کہ اخوان المسلمون کی کامیابی پر یا تو انتخابات منسوخ کیے جا سکتے ہیں یا پھر دھاندلی کی جاسکتی ہے۔علاوہ ازیں مصر میں الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ گزشتہ ہفتہ ہونے والے صدارتی انتخابات کے نتائج کا اعلان اتوار کو کیا جائے گا۔الیکشن کمیشن دو امیدواروں، اخوان المسلمون کے محمد مرسی اور سابق وزیرِ اعظم احمد شفیق کی جانب سے اپیلوں پر غور کر رہا تھا۔حتمی نتائج کا اعلان جمعرات کو ہونا تھا۔صدارتی الیکشن کمیشن کے سیکرٹری جنرل کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ کمیشن کے سربراہ فرخ سلطان اتوار کو3 بجے نتائج کا اعلان کریں گے۔ جمعہ کوسپریم کونسل آف آرمڈ فورس نے دونوں امیدواروں کے حمایتیوں سے متوقع نتائج کو ماننے کے لیے کہا ہے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس