Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

شام نے ترک جنگی طیارہ مار گرایا


دمشق 24جون2012ء: شامی فوج نے ترکی کا لڑاکا طیارہ مار گرایا جبکہ پرتشدد واقعات میں 10شامی فوجیوں سمیت 40افراد ہلاک ہوگئے ۔ غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق ترکی کا ایف 4 فینٹم طیارہ شام کے قریب مشرقی بحیرہ روم پر پرواز کے دوران جمعہ کو لاپتا ہوگیا تھا جس پر 2پائلٹ سوار تھے۔شامی فوج کے ترجمان نے ایک بیان میں کہاکہ ترکی کا لڑاکا طیارہ شامی فضائی حدود کی خلاف ورزی پر تباہ کیا گیا۔ ترجمان نے کہاکہ یہ طیارہ ہماری فضائی حدود میں انتہائی تیز رفتاری سے نچلی سطح پر پرواز کررہا تھا جس کی وجہ سے طیارہ شکن ڈیفنس نے اسے آرٹلری حملے کا نشانہ بناتے ہوئے ام الطوائر سے 10کلو میٹر کے فاصلے پر صوبہ لانا کی سمندر ی حدود میں مارا گرایا ۔ اس سے پہلے ترک کابینہ اور فوج کا اجلاس وزیر اعظم رجب طیب ایردوغان کی سربراہی میں ہوا۔ اجلاس کے بعد وزیراعظم ہائوس سے جاری بیان میں کہا گیا کہ شامی حکام کے ساتھ مشترکہ سرچ اینڈ ریسکیو آپریشن کے بعد یہ بات واضح ہوگئی کہ طیارے کو شام نے مار گرایا ہے۔ترک وزیراعظم کا کہنا ہے کہ واقعے کی تفصیلات پوری طرح واضح ہونے کے بعد ترکی اپنے رد عمل اور ضروری اقدامات کا اعلان کرے گا۔ بیان میں کہا گیا کہ لاپتا پائلٹوں کی تلاش کے لیے آپریشن جاری ہے۔غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق ترک حکومت نے شام سے طیارے مار گرائے جانے پر وضاحت طلب کر لی ہے۔ ادھر شام میں پرتشدد واقعات کے دوران 10فوجیوں سمیت کم از کم 40افراد ہلاک ہوگئے ۔شام کی انسانی حقوق کی تنظیم ، مبصرین کے مطابق مرنے والوں میں حکومتی فورسز کے 10فوجی بھی شامل ہیں جو کہ دمشق پر قبضہ کرنا چاہتے تھے ۔صوبہ حمص فائرنگ اور فوجیوں کی شیلنگ سے 7شہری بھی مارے گئے جن میں 2کا تعلق باغیوں کے مضبوط گڑھ قوصائر اور حمص میں شہر سے تھا ۔حما میں حکومتی فورسز کے حملے میں 2شہری مارے گئے جبکہ تیسرا شخص فوجیوں اور باغیوں کی لڑائی کے دوران مارا گیا ۔صوبہ دارا کے جنوبی علاقے مہاجا میں صدر بشار الاسد کیخلاف بغاوت کرنے والوں پر فورسز کے ٹینکوں سے حملہ کیا جبکہ اسی علاقے میں فورسز نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران ایک شخص کو گولی مار کر ہلاک کردیا۔ شمالی صوبہ الیسیو میں 2باغیوں سمیت 4افراد کو ہلاک کیا گیا جبکہ شدت پسندوں نے کردش سیکورٹی فورسز کے 4افراد کو رہا کردیا ۔ایک مبصر ادارے کا کہنا ہے کہ شمالی مشرقی صوبہ ادلیب میں مارٹ النعمان کے علاقے میں حکومتی ادارے پر حملے کے دوران 2افراد کو قتل کردیا گیا جبکہ دوما کے علاقے میں حکومتی فورسز نے 4 افراد کو قتل کردیا ۔مبصر نے مزید بتایا کہ دیرزور میں فورسز اور باغیوں کے درمیان جھڑپ میں 3 شہری جن میں ایک بچہ بھی شامل ہے جبکہ 4دیگر شہریوں کو اسی صوبہ کے مختلف علاقوں میں قتل کردیا گیا۔ واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں تازہ واقعات میں اب تک 116 افراد مارے جا چکے ہیں جن میں 69 عام شہری بھی شامل ہیں ۔علاوہ ازیں شام کے صدر بشارالاسد نے ہفتہ کو نئی حکومت تشکیل دینے کا فرمان جاری کردیاہے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس