Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

معصوم بچوں کے ساتھ زیادتی کرنے والے درندہ صفت افراد کو عبرت کا نشان بنایا جائے


لاہور24اکتوبر2019ء:امیر جماعت اسلامی لاہور ڈاکٹر ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ بچوں اور بچیوں سے زیادتی کے واقعات تسلسل سے ہورہے ہیں لیکن حکمران بے حسی کی تصویر بنے ہوئے ہیں ۔ 15 دن گزرنے کے باوجود نصیرآباد میں زیادتی کا نشانہ بننے والی نور فاطمہ کے مجرم قانون کی گرفت سے آزاد ہیں جو پولیس اور سیکورٹی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ۔ نور فاطمہ سے درندگی کرنےوالے گرفتار نہ ہوئے تو احتجاج کا دائرہ پورے لاہور میں پھیلائیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جے آئی یوتھ لاہور کے ہنگامی اجلاس میں عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر اجلاس میں زیادتی کا نشانہ بننے والی نور فاطمہ کے والد عاطف حسین، صدر جے آئی یوتھ لاہور صہیب شریف، سیکرٹری جے آئی یوتھ لاہور قدیر شکیل، عدنان ملک سمیت جے آئی یوتھ لاہور کے دیگر عہدیداران بھی موجود تھے ۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ ایک رپورٹ کے مطابق ملک میں سالانہ ایک ہزار سے زائد بچے زیادتی کا نشانہ بنتے ہیں یہ وہ واقعات ہیں جو پولیس میں رپورٹ کیے جاتے ہیں مگر بدقسمتی سے ایسے بہت سے واقعات بھی ہیں جو سماجی بے عزتی کے خوف یا مجرموں کی طرف سے دھمکیوں کی وجوہات کے باعث پولیس میں رپورٹ ہی نہیں ہوتے ۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کے ذمہ داران ایسے درندگی کے واقعات پر روایتی طرز عمل اور مٹی پاو پالیسی اختیار نہ کریں ۔ آج اگر غریب کی بیٹی محفوظ نہیں تو کل کسی بڑے کے ساتھ بھی اس طرح کے واقعات ہو سکتے ہیں ۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ پاکستان میں بچوں کے خلاف پیش آنے والے جنسی واقعات والدین کو شدید پریشانی میں مبتلا کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے نہ صرف سخت قانون سازی ہونی چاہیے بلکہ والدین، اساتذہ اور بچوں میں شعور پیدا کرنے کی بھی ضرورت ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ بچے اور بچیوں کے ساتھ درندگی کرنے والے گھناونے اور مکروہ افراد بلا کسی رعایت قانون کے شکنجے میں آنے چاہییں اور ایسے مکروہ جرائم میں ملوث درندہ صفت افراد کو سخت سے سخت سزائیں دی جائیں تاکہ ایسے
واقعات دوبارہ رونما نہ ہوں ۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس