Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

تین لاکھ سےزائدکشمیری نوجوان شہید،ہزاروں گرفتار اور ہزاروں بینائی سے محروم ہوچکے،مگر ہمارے حکمران بیانات سےآگےنہیں بڑھ رہے۔سینیٹرسراج الحق


 

لاہور15ستمبر 2019ء:امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کوئٹہ میں کشمیر عوامی مارچ سے خطاب کرتے ہوئے حکمرانوں کو خبر دار کیا ہے کہ کشمیر کاز کے ساتھ بے وفائی کی گئی تو اسلام آباد کا ایسا لاک ڈاﺅن کریں گے کہ تاریخ یاد رکھے گی ۔ کشمیر کاز کو نقصان پہنچانے والوں کو پاکستان میں قبرکی جگہ بھی نہیں ملے گی ۔ کشمیر ہماری اقتصادی اور معاشی شہ رگ بھی ہے ۔ کشمیر ہے تو پاکستان ہے ۔ یہ ملک حکمرانوں کا نہیں 22 کروڑ عوام کا بھی ہے ۔ ملک ہے تو حکمران ہیں ۔ سابقہ اور موجودہ حکمرانوں نے 70 سال سے کشمیر کے ساتھ بے وفائی کا رویہ اپنا رکھاہے ۔ حکمران کبھی واجپائی اور کبھی مودی کے ساتھ دوستیاں بناتے او ر تجارت کرتے رہے اور بھارت کشمیر میں قتل عام کرتا رہا ۔ مودی صرف کشمیر کو نہیں مظفر آباد کو بھی ہڑپ کرنا ، ہندوستان کے 22 کروڑ مسلمانوں کو بے دخل کرنا یا ہندو بنانا چاہتاہے ۔ وزیراعظم نے آج تک قومی قیادت کے ساتھ مشورہ کرنا اور قوم کو کشمیر پر ٹھوس لائحہ عمل دینا مناسب نہیں سمجھا ۔وزیراعظم آخری حد تک جانے کو تو تیار ہیں مگر ایل او سی پر جانے کو تیار نہیں ۔ جماعت اسلامی 20 ستمبر کو سرگودھا ، 27کو مظفر آباد اور 6 اکتوبر کو لاہور میں کشمیر بچاﺅ مارچ کرے گی۔ عوامی مارچ سے امیر جماعت اسلامی بلوچستان مولانا عبدالحق ہاشمی اور جے آئی یوتھ کے صدر زبیر گوندل نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پر مرکزی سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف بھی موجود تھے ۔ 

سینیٹر سرا ج الحق نے کہاکہ وزیراعظم اکیلے مظفر آباد جانے کی بجائے قومی قیادت کو ساتھ لے کر جاتے تو بھارت کو یہ پیغام جاتا کہ کشمیر کے مسئلہ پر پوری پاکستانی قوم متحد ہے۔ انہوںنے کہاکہ حکومت کی ناکام خارجہ پالیسی کی وجہ سے اسلامی ممالک بھی مودی کے ہمنوا بنے ہوئے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ بھارت نے تین لاکھ سے زیادہ نوجوانوں کو شہید ، ہزاروں کو عقوبت خانوں میں بند اور ہزاروں کو بینائی سے محروم کردیاہے ۔ کشمیری نوجوان پاکستان زندہ باد کے نعرے لگاتے شہید ہورہے ہیں ۔ مائیں بہنیں بیٹیاں پکا ر رہی ہیں مگر ہمارے حکمران بیانات سے آگے نہیں بڑھ رہے ۔ 

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ کشمیر میں کرفیو کو 43 ہو گئے ہیں لوگ گھروں میں بند بھوک سے مر رہے ہیں اور مردوں کو گھروں میں دفنانے پر مجبور ہیں لیکن پاکستان کی مقتدر قوتیں اور عالم اسلام کے حکمران سب کچھ دیکھنے کے باوجود ٹس سے مس نہیں ہورہے ۔ ۔انہوںنے کہاکہ قوم اب عملی اقدامات چاہتی ہے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکمران عوام کو ریلیف دینے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکے ہیں ۔ حکومت نے پہلے سو دن پھر چھ ماہ مانگے اور اب وزیراعظم کہتے ہیںکہ پانچ سال بعد ہماری کارکردگی کے متعلق سوال کیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ ان نالائق حکمرانوں کو پچاس سال بھی دے دیں تو کوئی تبدیلی نہیں آئے گی ۔ حکومت کے 13 ماہ ناکامیوں کی نہ ختم ہونے والی داستان ہے ۔ مہنگائی سو فیصد بڑھ گئی ہے بے روزگاری میں مسلسل اضافہ ہورہاہے لوگ نان شبینہ کے محتاج اور حکمران اب بھی جھوٹے وعدوںاور بلند و بانگ دعوﺅں سے باز نہیں آرہے ۔ 

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ تبدیلی کی طرح احتساب کا نعرہ بھی کھوکھلا ہوچکاہے ۔ ٹرانسپیرنسی انٹر نیشنل کہتی ہے کہ کرپشن پہلے سے بڑھ چکی ہے ۔ نیب کی کاروائیاں بھی ایک مخصوص علاقے تک محدود ہیں آج تک بلوچستان سے کسی ایک کرپٹ کو بھی نہیں پکڑا گیا ۔ انہوںنے کہاکہ بلوچستان میں سب سے زیادہ کرپشن ہے او ر یہ کرپشن حکمران کر رہے ہیں ۔ جماعت اسلامی نے بلوچستان کی محرومیوں اور مسائل پر پارلیمنٹ میں ہمیشہ آواز بلند کی ہے ۔ ہم بلوچستان کے عوام سے وعدہ کرتے ہیں کہ جماعت اسلامی اقتدار کے ایوانوں میں ان کے لیے آواز اٹھاتی رہے گی ۔

 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس