Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

کشمیر کے بعد آسام میں 19لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کرنے کے اقدام نے مودی کے عزائم کا پردہ چاک کردیا ہے


کراچی02 ستمبر2019 جماعت اسلامی سندھ کے جنرل سیکریٹری کاشف سعید شیخ نے کہا ہے کہ بھارت میں بے جے پی،راشٹریہ سیوک سنگھ، بجرنگ دل اور شیوسینا کی انتہاپسند حکومت نے نریندر مودی کی قیادت میں مسلمانوں کیلئے زمین تنگ کردی ہے، کشمیر کے بعد آسام کے 19لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کرکے انہیں نازی جرمنی طرز کی جیل نما کیمپوں میں منتقل، ووٹ دینے کا حق چھیننے اور آزادی سے نقل وحرکت پر پابندیوں نے بھارت کے جمہوری اور سیکولر چہرے سے نقاب نوچ پھینکا ہے۔انہوں نے آج ایک بیان میں مزید کہا کہ گذشتہ 29دنوں سے کشمیر میں بدترین کرفیو اور ڈیڑھ کروڑ مسلمانوں کی زندگی اجیرن،کھانے پینے کی، دوائیوں، مواصلات کے نظام سے محروم کرنے پر عالمی اداروں ،   اقوام متحدہ اور نام نہاد انسانی حقوق کی تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی سے شہ پاکر مودی اب بھارت کے بیس کروڑ مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کیلئے بھارت کی زمین تنگ کردی ہے،بھارتی عدالتوں، اپوزیشن،میڈیا اور سول سوسائٹی کی خاموشی بھارتی ریاستی کی خودکشی کے مترادف ہے۔گجرات کا قصاب نریندر مودی اور بھارت کو کٹر ہندو ریاست بنانے کی راہ پر گامزن ہے، مسلمانوں کے بعد اس کا ہدف سکھ، عیسائی اور دلت اقلیتیں ہونگی ، بجرنگ دل اور شیوسینا کا لیڈرنریندرا مودی نے بھارتی سیکولرازم اور جمہوری چہرے پر تیزاب پھینک کر اس کا چہرہ مسخ کردیا ہے، عالمی اداروں اور مغرب نے مخصوص تجارتی اور فوجی مفادات کیلئے اگر اب بھی مودی سے لاڈ پیار کا سلسلہ جاری رکھا اور مسلمانوں سمیت بھارت کے اقلیتوں کے قتل عام پر خاموش تماشائی کردار ادا کرتے رہے تو خطہ تیسری عالمی جنگ کا شکار ہوجائے گا جس سے نہ صرف ایشیا بلکہ تمام دنیا کے امن کو سنگین خطرات لاحق ہونگے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ پاکستان فوری طور پر کشمیری عوام کے ساتھ آسام اور بہار کے مسلمانوں کا مقدمہ بھی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی بنیادوں پر اقوام متحدہ ، اوآئی سی سمیت تمام عالمی اداروں میں اٹھائے اور مودی کے فاشسٹ، ہندوتا پر مبنی دہشتگردی کو بے نقاب کرکے اس کے اصل عزائم کو دنیا کے سامنے لانے میں اپنا بھرپور کردار ادا کرے۔#

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس