Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

تبدیلی تبدیلی کا راگ الاپنے والوں کے دور حکومت میں ملک معاشی لحاظ سے سونامی کی رفتار سے نیچے گیا ہے ۔سینیٹر سراج


لاہور 2ستمبر 2019ء:امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق نے کہاہے کہ تبدیلی تبدیلی کا راگ الاپنے والوں کے دور حکومت میں ملک معاشی لحاظ سے سونامی کی رفتار سے نیچے گیا ہے ۔ نااہل حکومت کی وجہ سے مسائل میں سونامی کی رفتار سے اضافہ ہواہے اور بیرونی قرضوں ، افراط زر ، تجارتی خسارہ، مہنگائی اور بے روزگاری سونامی کی رفتار سے اوپر گئے ہیں۔ وزیراعظم قرضے معاف کرنے کی مخالفت کرتے رہے اور اب انہوں نے خود 228 ارب روپے کے قرضے معاف کیے ہیں ۔ غریب ایک ہزار روپے بجلی کا بل ادا نہ کرے تو اس کا میٹر کاٹ دیا جاتاہے اور امیروں کے کروڑوں اربوں روپے کے قرضے معاف کردیے جاتے ہیں ۔یہ ظلم و استحصال کا نظام ہے جسے قوم مزید برادشت نہیں کرے گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے پشاور میں تجارتی مرکز کے افتتاح کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر صوبائی سیکرٹری جنرل عبدالواسع، امیر جماعت اسلامی پشاور عتیق الرحمن ، شبیر احمد خان ، سابق ایم این اے صابر حسین اعوان اور بحراللہ خان بھی موجود تھے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان کو اللہ تعالیٰ نے بے پناہ قدرتی وسائل سے مالا مال کیاہے ، ہم آبادی کے لحاظ سے دنیا کا چھٹا بڑا ملک اور ساتویں ایٹمی قوت ہیں لیکن کرپشن ، بد انتظامی اور قیادت کی غیر سنجیدگی نے معیشت کا بیڑا غرق کردیاہے ۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان مہنگائی کے لحاظ سے ایشیا میں تیسرا ملک ہے ۔ وزیراعظم نے معیشت کوبہتر بنانے اور عوام کو روزگار دینے کے لیے جن چیزوں کا اعلان کیا تھا ، ان کی قیمتوں میں بھی 35 فیصد اور چودہ فیصد تک اضافہ ہوچکاہے ۔ ادویات اور گیس کی قیمتوں میں دو سو فیصد اضافہ ہوچکاہے برآمدات سکڑ کر 28 ارب ڈالر اور درآمدات بڑھ کر 60 ارب ڈالر تک پہنچ چکی ہیں ۔ ٹیکسوں کا تمام بوجھ غریب پر ہے ۔ انہوںنے کہاکہ حکومت کے پاس انسانی ترقی کا پروگرام نہیں ۔ ملک ایسے لوگوں کے ہتھے چڑھ گیاہے جو اپنی ذات سے آگے دیکھنے کی صلاحیت نہیں رکھتے ۔ انہوںنے کہاکہ عوام مہنگائی ، بے روزگاری کے سونامی میں ڈوب گئے ہیں حکومت نے سودی نظام کو مزید مضبوط کیاہے ۔ انہوںنے کہاکہ کشمیر پر حکومت کی اچھل کود اور تقریروں کا کشمیریوں کو ابھی تک کچھ فائدہ نہیں ہوا ۔ ایک ماہ کے کرفیو نے کشمیریوں کا زندہ رہنامشکل بنادیا ہے لیکن حکمران بیانات سے آگے نہیں بڑھ رہے ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس