Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

قرآن و سنت کے نظام کے بغیرپاکستان مدینہ جیسی فلاحی ریاست نہیں بن سکتا۔جاوید قصوری


 

لاہور 25/اگست 2019ء: امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب و صدر ملی یکجہتی کونسل صوبہ وسطی پنجاب محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ پاکستان قرآن وسنت کے نظام کے بغیر فلاحی ریاست نہیں بن سکتا۔ موجودہ حکومت بار بار مدینہ کی ریاست کی بات کرتی ہے، ریاست مدینہ کا خواب شرمندہ تعبیر کرنا ہے تو تمام شعبوں میں قرآن وسنت کے رہنما اصولوں کو اپنانا ہوگا۔ سود سے پاک معیشت کی طرف بڑھنا ہوگا۔ قرآن کے احکامات پر عمل کیے بغیر فلاحی ریاست کا تصور ادھورا ہے۔ حکمرانوں نے اگر ملک کو مدینہ جیسی فلاحی ریاست بنانے کے وعدے سے انحراف کیا تو ان کا انجام بھی ماضی کے حکمرانوں جیسا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ میں اہم اجلاس اور سیالکوٹ میں مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اللہ اور اسکے رسول کا نظام ہی بہترین نظام ہے۔ بد قسمتی سے اسلام کے نام پر وجود میں آنے والے ملک میں انگریزوں کا نظام رائج ہے۔ ہر دور حکومت میں جماعت اسلامی نے غلبہ اسلام کی جدوجہد کی اور آئندہ بھی مقاصد کے حصول تک جاری رکھے گی۔ اللہ کی رسی کو چھوڑ کر پاکستان کے حکمرانوں نے کفار کے نظام کو اپنانے کی کوشش کی ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ آج 72 برسوں بعد بھی ہم اپنی منزل سے کوسوں دور ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت پاکستان کے اسلامی تشخص کو تبدیل کیا جارہا ہے۔ کچھ نام نہاد این جی اوز اورمکتبہ فکر کے لوگ، جنہیں کشمیری مسلمانوں کی قربانیاں تونظر نہیں آتیں مگر انھیں پاکستان کے اندرمظالم اور بہت ساری خرابیاں ضرور دکھائی د یتی ہیں۔محمد جاوید قصوری نے مزید کہا کہ پاکستان نازک دور سے گزر رہا ہے۔ بھارت سمیت دنیا بھر کے کفار کو پہلی اسلامی ایٹمی ریاست کا وجود برداشت نہیں ہورہا، اس لیے وہ پاکستان کے خلاف مسلسل سازشوں میں مصروف ہیں۔ اب وقت آگیا ہے کہ ان قوتوں کو منہ توڑ جواب دیاجائے۔ قائد اعظمؒ نے قرآن و سنت کو پاکستان کا آئین قرار دیا تھا، ہمیں اس کے عملی نفاذ کی جدوجہد کرنی ہوگی۔ 

 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس