Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حکومت داخلی و سیاسی تنازعات کو ہوا دیتی رہی،سیاسی قیادت ان تنازعات کو بھول کر کشمیر کیلئے متحد ہوجائے۔سینیٹر سراج الحق


لاہور 19اگست 2019 ء:امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت داخلی و سیاسی تنازعات کو ہوا دیتی رہی۔سیاسی قیادت سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ان تنازعات کو بھول کر کشمیر کیلئے متحد ہوجائے۔ کشمیر سیاسی نہیں پاکستان کے لیے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے،حکومت کاکشمیر ڈیسک قائم کرنے کا فیصلہ اچھا ہے،اب بین الاقوامی کشمیر کانفرنس بلائی جائے اورمسئلہ کشمیرکواجاگرکرنے کے لیے نائب وزیر خارجہ تعینات کرے،ابھی نہیں توکبھی نہیں کا لمحہ آن پہنچا ہے۔اب کشمیریوں کا ساتھ نہ دیاتو دوبارہ موقع نہیں ملے گا۔وقت آگیا ہے کہ عالم اسلام کشمیریوں کا ساتھ دے مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے قوم کو بیدار کریں گے۔ 25اگست کو پشاور میں اور یکم ستمبر کو کراچی میں کشمیر بچا ؤعوامی مارچ کریں گے۔،حکمران عوام کو خوف میں مبتلا کرنے کے بجائے قوم کو یکسو کرکے ان کوحوصلہ بڑھائے۔ حکومت کشمیر کی آزادی کے لیے قراردادوں سے آگے بڑ ھ کر ہر وہ اقدام کرے جس کا کشمیری مطالبہ کررہے ہیں۔ہندوستان نے ہٹ دھرمی نہ چھوڑی اور اپنے فیصلے کو واپس نہ لیا توکشمیر کے ساتھ ساتھ کئی دوسری ریاستوں سے بھی ہاتھ دھوبیٹھے گا۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اسلام آباد میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے  ہوئے کیا۔اس موقع پر نائب امیر جماعت اسلامی میاں محمد اسلم اور شاہد شمسی بھی موجود تھے۔

امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ 15دن سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو ہے۔خورک ادویات اور بچوں کیلئے دودھ تک ختم ہونے کی وجہ سے بڑا انسانی المیہ جنم رہاہے مگر دنیا خاموش ہے۔کشمیرایک جیل خانہ بن گیاہے۔ کشمیریوں کی قربانی کی وجہ سے پاکستان میں سکون اور آرام ہے۔ راج ناتھ سنگھ نے دھمکی دی ہے کہ ایٹم بم کے استعمال کا آپشن موجود ہے،پاکستان اور مسلمانوں کے خلاف پروپیگنڈہ والے  بھارتی دھمکیوں پر کیوں خاموش ہیں۔ موجودہ حکومت نے ابھی نندن کو بھارت کے حوالے کردیا جس پر مودی کو کہنے کا موقع ملا کہ 48گھنٹے میں اپنا پائلٹ لے کر آیا ہوں۔ کشمیریوں کو پیغام دیتا ہوں کہ کشمیر ہمارا ہے اور ہم کشمیری ہیں 

   سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ دنیا نے ہمارے بیانیہ کو اس طرح قبول نہیں کیا ہے جو ہونا چاہیے تھا۔ ہم حق پر ہیں لئے بھارت ناکام ہورہاہے۔حکمران عوام کو خوف میں مبتلا کرنے کی بجائے یکسو کرکے ان کاحوصلہ بڑھائیں۔ حکومت کو چاہیے کہ ایل او سی پر لگائی گئی باڑ کو ختم کرے شملہ معاہدے کی خلاف ورزی بھارت نے کی ہے۔ اس لیے یہ معاہدہ بھارت کے منہ پر مارا جائے۔بھار ت کا سنجیدہ طبقہ کشمیر پر حکومتی اقدامات کی مخالفت کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ خالصتان تحریک کی بھی حمایت کرنے کی ضرورت ہے۔ہمارے حکمرانوں نے ہمیشہ بھارت سے دوستی کی پینگیں بڑھائیں کبھی واجپائی اور کبھی مودی کا شاندار استقبال کیا گیا اور معمولی سبزیوں کی تجارت کیلئے ہندوؤں کو پسندیدہ قوم قرارر دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کے مسئلے پر حکومت ہو یا اپوزیشن سب کا ساتھ دیں گے۔پاکستان پر آزمائش کا لمحہ ہے ان شاء اللہ قوم اس لمحے سے سرخرو ہوکر نکلے گی۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس