Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

حکمرانوں کے دل پتھر سے بھی زیادہ سخت ہیں، غریب کی بات سننے کو تیار نہیں۔میاں اجمل حسین،یوسف گل


فیصل آباد7جولائی 2019ء:جماعت اسلامی حلقہ پی پی 115کے امیر میاں  اجمل حسین بدرایڈووکیٹ،جنرل سیکرٹری یوسف گل پراچہ نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ حکمرانوں کے دل پتھر سے بھی زیادہ سخت ہیں، عا م آدمی کی حالت انتہائی قابل رحم ہے، کوئی غریب کی بات سننے کو تیار نہیں۔ حکومت بے حسی اور ہٹ دھرمی کی تمام حدیں پھلانگ چکی ہے۔ لوگ مہنگائی کے ہاتھوں فاقہ کشی پر مجبور ہوچکے ہیں۔ بجلی گیس اور تیل کی قیمتوں میں آئے روز اضافہ سے غریب اور متوسط طبقہ بری طرح متاثر ہواہے۔ اقتدار کے ایوانوں میں بیٹھے لوگوں کو عام آدمی کے مسائل کا ادراک ہی نہیں۔ یہ عوام کو کیڑے مکوڑے اور خود کو کسی دوسرے سیارے کی مخلوق سمجھتے ہیں۔ مہنگائی، بے روزگاری، گھر کے کرائے جیسے مسائل سے انہیں کبھی پالا نہیں پڑا۔ ان لوگو ں نے کبھی بھوک اور پیاس دیکھی ہے نہ انہیں موسم کی شدت کا احساس ہواہے۔ علاج اور تعلیم کی سہولتوں سے محرومی اور انصاف کی عدم فراہمی جیسے مسائل عوام کے ہیں حکمرانوں کے نہیں۔ حکمران اپنی ذات کے عشق میں مبتلا ہیں۔ ہر کوئی خدا بننے کی ناکام کوشش کر رہاہے۔ چند روزہ زندگی کوبھی وہ فرعون کی طرح گزارنا چاہتے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ اس وقت ملک بہت مشکل حالات سے دوچار ہے۔ حالات کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے ہر فرد پریشان ہے۔ لوگوں کے چہرے زرد پڑ گئے ہیں۔ عام پاکستانی فکرمند ہے کہ ملک کا کیا ہوگا۔ حکمران ذاتی مفادات کے اسیر ہیں اور انہیں ملکی مسائل اور عوام کی پریشانیوں سے کوئی غرض نہیں۔ بجٹ پاس ہوگیا، حکومت نے عوام کو ریلیف دینے کی بجائے آئی ایم ایف کی شرائط کو پورا کیا۔ ملک کو موجودہ حالات سے نجات دلانے کے لیے بہت بڑی عوامی تحریک کی ضرورت ہے جو جماعت اسلامی نے ملک بھر میں شروع کررکھی ہے۔ملکی مسائل کا حل صرف نظام مصطفی کے نفاذ میں ہے۔ انہوںنے کہاکہ اللہ کے نظام سے بے اعتنائی حکمرانوں کا وطیرہ بن چکاہے جس کی سزا پوری قوم کو بھگتنا پڑ رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ دنیا و آخرت میں کامیابی کی ایک ہی چابی ہے اور وہ اللہ کا عطا کردہ نظام ہے۔ جب تک حکمران اللہ کے نظام سے بغاوت کا رویہ نہیں چھوڑتے، ملک مسائل کی دلدل سے نہیں نکل سکتا۔ انہوں نے کہاکہ عام آدمی کو اپنے مسائل کے حل کے لیے ایک وسیع تر اسلامی انقلاب کے لیے اٹھنا ہوگا۔

 

 

تحریک انصاف کی حکومت بھی چہروں کی تبدیلی کے ساتھ ماضی کی حکومتوں کا تسلسل ہی معلوم ہوتی ہے۔عمران رشید،سلیم انصاری

 

فیصل آباد7 جولائی 2019ء:جماعت اسلامی حلقہ پی پی 117کے امیر عمران رشید،نائب امیر محمدسلیم سلیم انصاری،کامران مگوں،چوہدری عبدالغفور،رانامحمداقراراوردیگرنے اپنے بیان میں کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت بھی قرضوں کے حصول میں دوسری حکومتوں کی نقش قدم پر چل رہی ہے۔ آئی ایم ایف سے 6ارب ڈالر حاصل کرنے کے بعد کریڈٹ ریٹنگ میں بہتری کی قوم کو نوید سنانے والے مزید قرض لینے کے اشارے دے رہے ہیں۔ بد قسمتی سے وقت کے ساتھ ساتھ موجودہ حکمرانوں کے چہروں سے بھی نقاب اترنا شروع ہوگیا ہے اور تمام خوشنما دعوﺅں کی گرد تحلیل ہوتی جارہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انھوںمیاں ارشدجاوید پی پی 117کے زونل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انھوںنے کہا کہ حکمرانوں کی ساری توجہ ملکی وسائل اور پیداورار سے آمدنی بڑھانے، باہر سے سرمایہ کاری لانے اور معیشت کو حقیقی طور پر مستحکم کرنے کی بجائے قرضوں کے حصول تک مرکوز ہو کر رہ گئی ہے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ بجٹ خسارے کا رونا رونے والے اپنے بعد کتنا خسارہ چھوڑیں گے؟۔ تحریک انصاف کی حکومت بھی چہروں کی تبدیلی کے ساتھ ماضی کی حکومتوں کا تسلسل ہی معلوم ہوتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہر ادارے میں کرپشن سکینڈل سامنے آرہے ہیں۔ احتساب کے اداروں میں بھی کالی بھیڑیں موجود ہیں جنہوں نے پورے نظام کو مفلوج کرکے رکھ دیا ہے۔ پوری قوم حیران و پریشان ہے کہ پانامہ لیکس میں بے نقاب ہونے والے دیگر436کرپٹ پاکستانیوں کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کی جارہی؟۔پانامالیکس کے معاملے پر حکومت اور دیگر اداروں نے خاموشی اختیار کررکھی ہے۔ عمران رشیدنے مزید کہا کہ حکمرانوں نے ملک و قوم کو بند گلی میں دھکیل دیا ہے۔قوم کو خود مختاری اور غیرت کا درس دینے والے قومی عزت و وقار کو مجروح کررہے ہیں۔ اداروں کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کرنے کی روایت تباہ کن ہوگی ،اس سے ملک میں انتشار اور افراتفری پھیلے گی۔ تمام اداروں کو قانونی دائروں میں رہتے ہوئے کام کرنا چاہیے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس