Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حکومت اور ریاستی طاقتور ادارہ کا ایک پیج پر آنا اچھاہے لیکن اس حسن اتفاق سے عوام کو کوئی ریلیف نہیں مل رہا۔لیاقت بلوچ


لاہور04جولائی 2019ء:نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اور سیاسی و پارلیمانی امور کے انچار ج لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ حکومت اور ریاستی طاقتور ادارہ کا ایک پیج پر آنا اچھاہے لیکن اس حسن اتفاق سے عوام کو کوئی ریلیف نہیں مل رہا۔ عوام کے معاشی حالات ابتر اور ناقابل برداشت ہیں ۔ سیاسی محاذ پر بحران اچھا شگون نہیں ۔ بحرانوں سے نجات اور پاکستان دشمن قوتوں کے مقابلہ کے لیے سیاست میں استحکام ، قانون ، عدلیہ اور آئین کی بالادستی ، شرافت ، برداشت اور باہمی احترام کی قدروں کو بحال کیا جائے ۔

لیاقت بلوچ نے کہاکہ حکومت کشمیر پر کمزور موقف اور سودے بازی کا رویہ ترک کرے ، امریکی خوشنودی کے لیے اسرائیل کو تسلیم کرنے کا شیطان رویہ ذہن سے نکالے اور کشمیر و فلسطین پر قائداعظمؒ کے اصولی موقف کی پاسبانی کرے ۔ ایل او سی پر بھارت دہشتگردی کر رہاہے ۔ مقبوضہ کشمیر میں پرامن کشمیریوں کو ظلم اور تشدد کا نشانہ بنارہاہے ۔ انسانی حقوق پامال ہیں حکومت بھارتی مکروہ چہرے کو بے نقاب کرے ۔انہوںنے کہاکہ اقوام متحدہ سیکورٹی کونسل کے غیر مستقل ممبر شپ کے لیے پاکستان نے بھارت کی حمایت کر کے گناہ بے لذت کمایا اور کشمیریوں کے زخموں پر نمک چھڑکا ہے۔ 

لیاقت بلوچ نے کہاکہ افغانستان ایک مرتبہ پھر فیصلہ کن دوراہے پر کھڑاہے ۔ افغانستان کے عوام میں امریکہ بھارت اور اسرائیل نے نفرت کا زہر بھراہے ۔قومی قیادت افغانستان میں امن و استحکام کے لیے ہمہ پہلو قومی پالیسی اختیار کرے ۔ ضیاءالحق دور میں بھی پاکستان کی پالیسی بالآخر قوتوں نے ناکام بنادی اور اب بھی تمام تر امریکی مدد کے باجود پاکستان تنہائی کا شکار ہے ۔

 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس