Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

ریاستی ادارے آئین پاکستان کے دائرہ کار میں رہیں وگرنہ آئین و قانون سے ماورا اقدام ملک کو بند گلی اور انارکی کی طرف دھکیل دیں گے۔ لیاقت بلوچ


لاہور 3جولائی 2019ء:نائب امیر جماعت اسلامی پاکستا ن اور سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے جے آئی یوتھ اور مرکزی مشاورتی اجلاس منصورہ میں خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریاست اور حکومت ایک پیج پر ہیں، اس خوش آئند اتفاق سے عوام کے مسائل حل نہیں ہورہے بلکہ جمہوریت کے نام پر فساد، بے اعتمادی اور فسطائیت کی جڑیں مضبوط ہورہی ہیں۔سیاست، جمہوریت، پارلیمنٹ اور ریاستی ادارے آئین پاکستان کے دائرہ کار میں رہیں وگرنہ لاقانونیت اور آئین و قانون سے ماورا اقدام ملک کو بند گلی اور انارکی کی طرف دھکیل دیں گے۔ 
لیاقت بلوچ نے کہاکہ نوجوان باعزت روزگار اور باوقار زندگی چاہتے ہیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ آئی ایم ایف کی شرائط نے قوم پر معاشی، سماجی اور سیاسی غلامی مسلط کردی ہے۔ یہ صورت حال کسی بھی مہذب، آزاد اور خود مختار ملک کے لیے قابل قبول نہیں ہے۔ قومی بجٹ کو بے کار، ناکارہ اور بے اعتماد دستاویز بنا دیا گیاہے۔ ٹیکسوں کی بھر مار سے صنعت، مارکیٹیں، ٹیکسٹائل اور چینی کے کارخانے بند ہو گئے ہیں۔ تاجر، صنعت کار سراپا احتجاج ہیں۔ عوام کے لیے بجلی، گیس، تیل، آٹا، گھی، چینی، دالوں، سبزیوں، کھاد، بیج، ادویات کی قیمتیں ناقابل برداشت ہوگئی ہیں۔ جماعت اسلامی 12 جولائی کو ملتان اور 19 جولائی کو راولپنڈی میں مہنگائی، بے روزگاری اور آئی ایم ایف کی غلامی کے خلاف عوامی مارچ کرے گی۔
لیاقت بلوچ نے صحافیوں کے سوال کے جواب میں کہاکہ چیئرمین سینیٹ کے خلاف عدم اعتماد عوام کے نزدیک نان ایشو ہے۔ اقتدار کی غلام گردشوں میں فساد ہی بڑھے گا۔ ممبروں کی خرید و فروخت گھوڑوں خچروں کی طرح ہو گی۔ جماعت اسلامی آئین، جمہوریت اور پارلیمانی روایات کے مطابق فیصلہ کرے گی۔ اس وقت ہماری ترجیح عوامی مسائل پر عوام کی ترجمانی ہے۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس