Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

کاروباری لاگت بڑھنے سے ٹیکسٹائل سیکٹر اور سیمنٹ فیکٹریاں بند ہورہی ہیں ۔ محمد جاوید قصوری


لاہوریکم جولائی2019ء: نو منتخب امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ گیس اور سی این جی کی قیمتوں میں ہوشر با اضافہ قابل مذمت ہے ، اسے فی الفور واپس لیا جائے ۔ گھریلو صارفین کے لیے گیس 66فیصد تک مہنگی کرنے سے عوام براہ راست متاثر ہوں گے، جبکہ صنعتی شعبہ تباہ ہوجائے گا ۔ حکومت نے دس ماہ کے دوران گیس کے نرخوں میں 263فیصد تک اضافہ کیا ہے جس نے غریب عوام کی زندگی اجیرن بناد ی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے گزشتہ روزلاہور میں مختلف عوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انھوں نے کہا کہ حکومتی غیر دانشمندانہ اقدامات سے ملک کی صنعت و تجارت تباہ ہوگئی ہے ۔ ٹیکسٹائل سیکٹر اور سیمنٹ فیکٹریوں نے کاروباری لاگت 40فیصد تک بڑھنے سے کاروبار بند کرد ئے ہیں ۔ تاجر برادری اور عوام الناس حکومت کی بدترین کارکردگی سے شدید مایوس ہوچکے ہیں ۔ پاکستان کے مقابلے میں بھارت اور بنگلہ دیش کے تاجر دنیا بھر میں نئی منڈیوں تک سستی مصنوعات لے کر جارہے ہیں ،جبکہ پاکستانی تاجروں کی مشکلات دن بدن بڑھتی چلی جا رہی ہیں ۔ المیہ ہے کہ تاریخ کے نا اہل ترین حکمران ملک و قوم پر مسلط ہوچکے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ ٹیکسوں کی بھر مار اور ان میں اضافے نے عوام کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے ۔ ٹیکس نیٹ ورک کو بڑھانے کی بجائے جو افراد پہلے ہی ٹیکس نیٹ ورک کا حصہ ہیں ،حکومت کی جانب سے انہی پر بوجھ بڑھایا جارہا ہے ۔ یوں محسوس ہوتاہے کہ جیسے ملک کے اندرموجود مٹھی بھر اشرافیہ ہر طرح کے نظم و ضبط اورقانون سے بالاتر ہے ۔ محمد جاوید قصوری نے مزید کہا کہ شعبہ زراعت کے حوالے سے حکمرانوں کی عدم توجہی اور بے حسی کے باعث کے دنیا بھر میں اپنی منفرد حیثیت رکھنے والا پاکستانی آم کی بر آمد میں 50فیصد تک کمی واقع ہوچکی ہے ۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ حکومت کی ملک و قوم کو درپیش مسائل اور ان کے حل سے کوئی غرض نہیں ۔ ہر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والا شخص پریشان ہے ۔ 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس