Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حالیہ تعلیمی بجٹ میں کٹوتیوں، سکالرشپس کے خاتمے اورتعلیمی فیسوں میں اضافے کے خلاف جمعیت کا 2روزہ احتجاجی کیمپ


لاہور21/جون 2019ء:امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے وفاقی بجٹ میں تعلیم، طلباء اور مزدور دشمن پالیسیوں کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ تعلیم دشمن بجٹ کسی صورت قابل قبول نہیں ہے طلبہ سمیت پوری قوم تعلیم دشمن پالیسیوں کو مسترد کرتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار گذشتہ رو زانہوں نے اسلامی جمعیت طلبہ لاہور کے زیر اہتمام مال روڈ پر وفاقی حکومت کی جانب سے حالیہ تعلیمی بجٹ میں کٹوتیوں، سکالرشپس کے خاتمے اورتعلیمی فیسوں میں اضافے کے خلاف لگائے گئے 2 روزہ ا حتجاجی  کیمپ کے شرکاء سے خطا ب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ناظم اسلامی جمعیت طلبہ لاہور حافظ ذوالنون، سیکرٹری اسلامی جمعیت طلبہ لاہور عطاء الرحمن شعبان سمیت بڑی تعداد میں طلبہ نے شرکت کی۔ ذکر اللہ مجاہد نے کہا کہ نااہل حکمران نوجوانوں، طلباء، مزدوروں، کسانوں اور غریب عوام کی بنیادی ضروریات پورے کرنے میں ناکام ہوچکے ہیںاورآئی ایم ایف سمیت سامراجی اداروں سے کشکول اُٹھائے قرضے لے کر عوام کے اوپر مزید قرضوں کا ڈال رہے ہیں جبکہ انہی سامراجی اداروں اور آئی ایم ایف کے حکم پر ملک کے اندر پرایویٹایزیشن کی پالیسیوں پر عمل درآمد کو تیز کرکے عوام کو مسلسل غربت، مہنگائی اور محرومیوں کے اندھیروں میں دھکیل رہے ہیں جس کی جماعت اسلامی مذمت کر تی ہے۔ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا ہے کہ تعلیم دشمن بجٹ غریبوں سے تعلیم کی سہولیات چھینے کے مترادف ہے ۔ تعلیمی بجٹ 65 ارب سے کم کر کے 43 ارب کرنا تعلیم دشمنی ہے۔ جبکہ ملک میں پہلے ہی2 کروڑ سے زائد بچے تعلیم کی سہولیات سے محروم ہیں ایسے میں تعلیمی بجٹ میں کمی حکمرانوں کی بے حسی اور نااہلی

کا ثبوت ہے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس