Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

ملک کے مختلف شہروں میں ڈاکٹر محمد مرسی کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی،سینیٹر سرا ج الحق ، لیاقت بلوچ ، امیر العظیم و دیگر رہنماﺅں کا خطاب


لاہور 18جون 2019ء:امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کی اپیل پر ملک بھر میں مصر کے شہید صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی ۔ سینیٹر سراج الحق نے پشاور کے جناح پارک میں غائبانہ نماز جنازہ پڑھائی ۔ اس موقع پر صوبائی امیرسینیٹر مشتاق احمد خان بھی موجود تھے ۔ سیکرٹری جنرل امیر العظیم نے راولپنڈی میں نماز جنازہ پڑھائی ،کراچی میں حافظ نعیم الرحمن کی امامت میں نماز جنازہ اد ا کی گئی۔ جماعت اسلامی کے مرکز منصورہ میں غائبانہ نماز جنازہ کا بڑا اجتماع ہوا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی ۔ امیر جماعت کی اپیل پر جماعت اسلامی کے زیراہتمام صوبائی و ضلعی ہیڈکوارٹرز پر صدر مرسی کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی ۔ نماز جنازہ میں عوام نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔ اس موقع پر نائب امیر راشد نسیم، ڈپٹی سیکرٹری جنرل اظہر اقبال حسن ، محمد اصغر ، سید وقاص جعفری ، حافظ ساجد انور ، سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف ، امیر جماعت اسلامی ذکر اللہ مجاہد ، شیخ الحدیث مولانا عبدالمالک بھی موجود تھے ۔امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سرا ج الحق نے جناح پارک پشاور میں ڈاکٹر محمد مرسی کی غائبانہ نماز جنازہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ ڈاکٹر محمد مرسی شہید نے جان دے دی مگر ڈکٹیٹرشپ کو قبول کیا نہ مسجد اقصیٰ کی آزادی کے مطالبے سے دستبردارہوئے ۔  منصورہ میں غائبانہ نماز جنازہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے نائب امیر جماعت اسلامی لیاقت بلوچ اور عبدالغفار عزیز اور جماعت اسلامی کے رہنما حافظ محمد ادریس نے کہاکہ اگر مصر میں ڈاکٹر محمد مرسی کی نماز جنازہ پر پابندی نہ لگائی جاتی تو نماز جنازہ کا یہ اجتماع دنیا کی تاریخ کا سب سے بڑا اجتماع ہوتا ۔ مصر کے عوام ڈکٹیٹر جنرل سیسی کو بتا دیتے کہ وہ آج بھی ڈاکٹر محمد مرسی کے ساتھ کھڑے ہیں ۔ ڈاکٹر محمد مرسی کی شہادت کا واقعہ پہلا نہیں ۔ انسانی تاریخ نے حسن البنا شہیدؒ اور سید قطب شہید ؒکے ساتھ بھی یہی سلوک ہوتے دیکھاہے ۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ اللہ کی راہ میں جو استقامت سے کھڑے رہتے ہیں اللہ تعالیٰ استعمار اور طاغوت کے مقابلے میں ان کی مدد کرتاہے ۔ زندہ مرسی بھی جنرل سیسی کے لیے بڑا خطرہ تھا لیکن شہادت کے بعد ڈاکٹر مرسی سیسی کے لیے خوف کی علامت بن گئے ہیں ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ خود کو جمہوریت ، انسانی حقوق اور انسانی قدروں کے دعویدار جمہوریت اور عوام کی حمایت کے ذریعے آنے والے اسلام پسندوں کو بھی برداشت نہیں کرتے اور جمہوریت کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ بن کر کھڑے ہو جاتے ہیں لیکن یہ قافلہ حق اپنی منزل پر ضرور پہنچے گا اور استعمار کا مسلط کردہ فرسودہ نظام ختم ہو کر رہے گا ۔

سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان امیر العظیم نے راولپنڈی میں غائبانہ نماز جنازہ کے موقع پر کہاکہ دنیا کے طاغوت کو اندازہ نہیں تھاکہ ڈاکٹر محمد مرسی اتنے زیادہ ووٹ لے کر اقتدار تک پہنچ جائیں گے ۔ انہوںنے پورا انتظام کیا تھاکہ اسلام پسندوں کو ووٹ نہ پڑے اوراسلام کو نظا م زندگی کے طور پر سامنے نہ آنے دیا جائے ۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس