Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

موجودہ بجٹ کسان دشمن اورزراعت دشمن ہے ۔چوہدری نثار احمد


لاہور 12جون 2019ء: مرکزی صدر کسان بورڈ پاکستان چوہدری نثار احمدنے کہا ہے کہموجودہ بجٹ کسان دشمن اورزراعت دشمن  ہے ۔ زرعی شعبہ اور کسانوں کو یکسر نظر انداز کیا گیا۔8000 ارب کے بجٹ میں زراعت کیلیے صرف 12 ارب رکھے گئے ۔516 ارب کے نئے ٹیکسوں کا بوجھ بھی ستر فی صدکسانوں پر پڑے گا۔انہوں نے کہا  کہ وفاقی بجٹ  میں زرعی شعبہ اور کسانوں کو نظر انداز کیا گیا، زرعی اجناس آلو ،گنا اور دیگر کی کم قیمتوں پر خرید نے سے کسانوں کو تباہ کر دیا۔زرعی اجناس کی خرید کیلیے بجٹ میںمناسب رقم نہ رکھنا کسانوں پر ظلم ہے۔زرعی مداخل پر کوئی سبسڈی نہیں دی گئی جب تک حکمران اپنی ترجیحات میں زراعت کو پہلے نمبر پر نہیں رکھیں گے اس وقت تک ملکی معیشت میں کبھی بہتری نہیں آسکتی۔ انھوں نے مزید کہا کہ زراعت ہی کی بدولت صنعتوں کا پہیہ رواں دواں ہے۔ حکومت اپنی ترجیحات کا ازسرنو تعین کرے اور ملک کی دوتہائی آبادی جس کا دارومدار بالواسطہ یا بلاواسطہ زراعت کے شعبے سے ہے اسے نظر انداز کرنا اور اس شعبے کو ترجیحات میں شامل نہ کرنا سماجی اور معاشی اعتبار سے بھی قابل مذمت ہے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت نے کسانوں کو کمزور کرنے کی پالیسیاں اپنا رکھیں ہیں زرعی قرضہ جات پر سود ختم کرنے کا اعلان کیا جانا چاہیے تھا۔ انھوں نے ارکان اسمبلی سے اپیل کی کہ وہ کسان کش بجٹ منظور نہ کریں اپوزیشن اپنا بھرپور کردار ادا کرے۔اگر حکومت کسانوں کے ساتھ مخلص ہے تو زرعی قرضہ جات پر سود کو ختم اور زرعی ٹیوب ویل کے لیے بجلی کے فلیٹ ریٹ مقرر کرے۔ زرعی اجناس گنا،گندم،آلو،کپاس ،مونجی کی کم قیمتوں پر خرید نے سے کسانوں کو تباہ کر دیازرعی مارکیٹنگ کیلیے بجٹ میں کوئی رقم نہیں رکھی گئی۔انہوں نے اور شوگر ملوں سے سابقہ واجبات دلوائیں جائیں ۔انہوں نے کہا کسان دشمن اور عوام دشمن بجٹ کے خلاف جے آئی کسان بورڈ جماعت اسلامی کی مہنگائی کے خلاف چلائی گئی تحریک میں شامل ہو نگے۔ 12-6-2019
حاجی

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس