Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

موجودہ بجٹ ،بجٹ نہیں بلکہ بم ہے، اس سے مہنگائی کاسونامی آئے گا۔سینیٹرمشتاق احمد خان


اسلام آباد 11جون 2019ء: امیرجماعت اسلامی صوبہ خیبرپختونخواہ اور سینیٹر مشتاق احمد خان نے پابجٹ پر اپنے خیالات کا اظہارکرتے ہوئے کہا ہے کہ 2019-20کابجٹ پی ٹی آئی حکومت کا پہلا بجٹ ہے اور یہ بجٹ نہیں بلکہ ایک بم ہے جو عوام چلایاگیا۔اس سے ہر طرف عوام کی تکلیف اورچیخیں بلندہوگی۔ اس سے مہنگائی کاڈیم ٹوٹ جائےگااور مہنگائی کاایک سونامی آئے گا۔چھ ہزار آٹھ سو ارب یہ بجٹ ہے جس میں تین ہزار ارب کاخسارہ ہے۔اس بجٹ میںکل پانچ ہزار پانچ سو ارب کے ٹیکس لگائے گئے ہیں۔انہوںنے کہا کہ گذشتہ حکومت کے دور میں پاکستان پرتقریبا تیس ہزار ارب قرضے تھے جبکہ پی ٹی آئی حکومت نے صرف 9ماہ کے عرصے میں ساڑھے پانچ ہزار ارب قرضے لیے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس بجٹ میں سب سے بڑاخرچ عوام کی فلاح بہبودکے لیے نہیں بلکہ سود کی ادائیگی کے لیے ہے۔ان چند نکات سےاندازلگایاجاسکتاہے کہ یہ کس طرح کابجٹ ہے۔یہ ایک بہت ہی خطرناک بجٹ ہےاس سے سوائے مہنگائی ،  سوائے ٹیکس ، سوائے قیمتیں بڑھنے ڈالر اورسونے کی قیمتیں اوپر جانے اور روپے کی قیمت میں بے قدری کے علاوہ کچھ حاصل نہیں ہوگا۔ اکنامک سروے آپ پاکستان اورمشیر خزانہ کے بیانات کی روشنی میں کہا جاسکتا ہے کہ یہ ایک عوام دشمن بجٹ ہے اور یہ آئی ایم کے مفادات کاتحفظ کرتا ہے۔اس لیے جماعت اسلامی اس بجٹ کو مسترد کرتی ہےاورمہنگائی اوربجٹ کے خلاف ہم آوازبلند کریںگے۔
 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس