Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

وفاقی بجٹ میں 105 ارب کے اضافی ٹیکس آئی ایم ایف کی ظالمانہ شرائط پر عمل درآمد کا نتیجہ ہے ۔ذکراللہ مجاہد


لاہور11جون 2019ء:امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ وفاقی بجٹ میں 105 ارب کے اضافی ٹیکس آئی ایم ایف کی ظالمانہ شرائط پر عمل درآمد کا نتیجہ ہے ۔ عوام پر مزید ٹیکسوں کے بوجھ نے لوگوں کو  سٹرکوں پر آنے پر مجبور کر دیا ہے ۔ بجٹ کے نام پر غریبوں اور سفید پوش طبقات کا استحصال کیا جا رہا ہے ۔ عام آدمی دووقت کی روٹی کے کیلئے ترس رہا ہے اور حکومتی وزراء کیلئے 50 ملین گھروں کی آرائش کا کوٹہ رکھنا غریبوں پر ظلم ہے ۔ملک و قوم کو آئی ایم ایف کا غلام بنا دیا گیا ہے جس کی وجہ سے ہمارے معاشی فیصلے حکمران نہیں آئی ایم ایف کی ہدایات پر ہو رہے ہیں جس کا واضح ثبوت وفاقی بجٹ کی صورت میں قوم کے سامنے ہے ۔ ان خیالات کا اظہا رگذشتہ روز انہوں نے 6 1جون کوہونے والے عوامی مارچ کی تیاریوں کے حوالے سے خصوصی اجلا س میں ذمہ داران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لاہور انجینئر اخلاق احمد ، نائب امراء جماعت اسلامی لاہور ملک شاہداسلم، ضیاء الدین انصاری ، اظہر بلا ل ، افتخار احمد چوہدری ، نائب سیکرٹریز جماعت اسلامی لاہور عبدالعزیز عابد ، چوہدری محمودالاحد ، مرزا عبدالرشید ، عبدالحفیظ اعوان ، سیکرٹری اطلاعاعت جماعت اسلامی لاہور اے ڈی کاشف ، عامر  نثار خان ، و سیم اسلم قریشی سمیت دیگر رہنمائوں نے شرکت کی۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ حکمران اب قوم کو مزید بے وقوف بنانا بند کریں ، کرپشن کا پیسہ وصول کیا جائے اور میرٹ پر سب کا احتساب کیا جائے ۔ ملک و قوم کو لوٹنے والے کسی ہمدردی کے مستحق نہیں ہو سکتے ۔ انہوں نے کہا کہ کرپٹ چاہے کسی بھی ادارے پارٹی یا جماعت سے تعلق رکھے احتساب کا معیار ایک جیسا ہو نا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ ہونے والے خفیہ معاہدوں کی ہولناکیاں بجٹ میں نئے ٹیکس کااجراء اور مہنگائی کی صورت میں سامنے آرہی ہیں ۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی لاہور کل 12 مئی بروز بدھ کو پریس کلب لاہور میں پریس کانفر نس کے ذریعے اپنے آئندہ کے لائحہ عمل ، وفاقی بجٹ پر تحفظات اور 16 جون کو ہونے والے عظیم الشان عوامی مارچ کی تفصیلات سے آگاہ کر ے گی ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس