Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

ملکی حالات اندھوں کو بھی نظر آرہے ہیں صورتحال مسلسل بگڑتی جا رہی ہیں۔امیر العظیم


لاہور31مئی 2019ء:جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل امیر العظیم  نے کہا ہے کہ ملکی حالات اندھوں کو بھی نظر آرہے ہیں صورتحال مسلسل بگڑتی جا رہی ہیں 100 دن میں انقلاب برپا کرنے کے دعویدار وں نے ایک سال گزار لیا مگر امید کی ہلکی سی بھی کرن دور تک نظر نہیں آتی،الیکشن سے قبل عمران خان نے کہا تھا کہ آئی ایم ایف کے پاس جانے کی بجائے خود کشی کرنے کو ترجیح دونگا مگر انہوں نے خو د کشی تو نہیں کی، عوام کو خودکشی پر مجبور کر دیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے دفتر جماعت اسلامی بہاول پور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
امیر العظیم نے کہاکہ عوامی ضروریات کی بنیادی اشیاء کے نرخ مسلسل  بڑھتے جا رہے ہیں ڈالر مسلسل مہنگا ہو رہا ہے  ہوشربا مہنگائی نے عوام کے ہوش ٹھکانے لگا دئیے ہیں اور حکومت سوائے ٹاسک فورس بنانے کے کسی چیز میں سنجیدہ نظر نہیں آتی  ایسے حالات میں جماعت اسلامی عوام کو تنہا نہیں چھوڑ سکتی اس لیے عید کے بعد مہنگائی،بے روز گاری اور آئی ایم ایف کی غلامی کے خلاف عوامی مارچ تحریک کا آغاز کرنے جا رہی ہے جس کا دائرہ کار پورے ملک میں پھیلایا جائے گا ۔امیر العظیم نے مزید کہا کہ اپوزیشن کی دیگر جماعتوں نے بھی تحریک چلانے کی بات کی ہے ہم ان کو کہتے ہیں کہ ملک میں جو حالات ہے ان حالات کے وہ بھی ذمہ دار ہیں ان کو چاہیے کہ وہ جب عوام کے پاس جائیں تو اپنا منہ صاف کرکے جائیں اور اپنی ان غلطیوں پر عوام سے معافی مانگیں کیونکہ اب تک آئی ایم ایف سے 22 دفعہ قرضہ لیا گیا ہے اور 21 دفعہ قرضہ ان پرانی  جماعتوں نے لیا۔ بیرون ملک جو سرمایہ پڑا ہوا ہے اس کو رضاکارانہ طور پر ملک میں واپس لائیں اور اس کے بعد وہ عوام کے پاس جائیں۔انہوں نے کہا کہ ہم قوم سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ نعروں پر مرمٹنا اور تقریوں کے پیچھے چلنا چھوڑ دے کیونکہ یہ ایسی چمک دمک ہے جو قوم کو غلط راہ پر لے جاتی ہے عوام قول کو عمل کے ساتھ دیکھے ہم نے بھی عمران خان کا کے پی کے میں ساتھ دیا تھا مگر وہ خود ہی رفتہ رفتہ الگ میز پر چلے گئے اور سیاسی اختلافات کے باوجود قومی حکومت بنا لی اور ان سیاست دانوں کے ساتھ جن کو وہ ماضی میں دیکھنے کو تیار نہیں تھے جس کے بعد عمران خان کا نظریاتی کردار ختم ہو کر رہ گیا۔جماعت اسلامی کی لیڈر شپ نے ہمیشہ خدمت کی سیاست کی ہے اور ہر قسم کے داغ سے اپنے آپ کو دور رکھا۔ ہم عوام کو کہتے ہیں کہ16 جون کو چلائی جانے والی تحریک میں جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔ایک سوال کے جواب میں امیر العظیم نے کہا کہ احتساب شروع سے ہی یک طرفہ تھا جو ملک و قوم کے اندر برکت پیدا نہیں کرسکا بے برکتہ احتساب تھا اور ایک ویڈیو آنے کے بعد شرمناک احتساب بن گیا کسی بھی منصف یا جج کے عہدہ پر اخلاقیات کے حوالے سے سوالیہ نشان پیدا ہوجائے تو اس کو فوری طور پر عہدہ چھوڑ دینا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی ایم بیرونی ایجنڈے پر کام کر رہے ہی اور ملکی ایجنسیوں کو بتانا چاہیے کہ ان کو کہاں کہاں سے فنڈز مل رہے ہیں جس لہجے میں پی ٹی ایم والے پاکستان اور فوج کے بارے میں بات کرتے ہیں اس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ بیرونی ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں جس کی ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں۔قبل ازیں  امیرالعظیم نے بی وی ہسپتال میں  امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر کی عیادت بھی کی۔
 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس