Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

آئی ایم ایف معاہدے کے خطرناک نتائج برآمدہوں گے،ڈیل پارلیمنٹ میں زیر بحث لائی جائے۔ سینیٹر سراج الحق


لاہور14مئی 2019 ء:    امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ آئی ایم ایف کے چند ارب ڈالر کی زنجیر کے ذریعے حکومت نے پاکستان کے22کروڑ عوام کو جکڑ دیا ہے، غیر منتخب لوگوں کے ذریعے پاکستان کے اقتصادی معاہدے کیے جارہے ہیں، آئی ایم ایف سے ڈیل کو پارلیمنٹ میں زیربحث لایا جائے۔آئی ایم ایف معاہدے کے خطرناک نتائج برآمدہوں گے، کب تک پاکستان کی تقدیر کا فیصلہ غیر منتخب لوگ کرتے رہیں گے۔ ہمارا فائدہ خطے میں افغانستان اور ایران سے بہترین اورقریبی روابط کے فروغ میں ہے، عید کے بعد وسیع پیمانے پر رابطہ عوام مہم چلائی جائے گی۔ پی ٹی آئی ہو، مسلم لیگ ن یا پیپلزپارٹی سب ایک نظام کا حصہ ہیں، 70سالوں میں ان تمام جماعتوں کو کئی بار آزمایاجاچکا ہے، ملک و قوم کی قسمت میں مسائل ، مشکلات میں ہر دن اضافہ ہوا۔اب یہ معاملات آئی ایم ایف سے ڈیل تک نہیں رکیں گے بلکہ اس قرض کو اتارنے کیلئے ہمیںخدشہ ہے کہ پاکستان کے اداروں کو گروی رکھ کرمزید قرضے لینے پڑیں گے اور ایک دن نوبت آئے گی کہ ہمارے ہوائی اڈے بھی ان کے پاس گروی ہوں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں اپنی طرف سے اخبارات اور ٹی وی چینلز کے ایڈیٹرز کے اعزاز میں دیے گئے افطار ڈنر کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف بھی موجود تھے۔
    سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ عوام بجا طور آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدے کو اپنے لیے نیا پھندااورغلامی کا طوق سمجھ رہے ہیں۔اس وقت ملک پر غیر منتخب لوگوں کی حکومت ہے۔آئی ایم ایف سے مذاکرات بھی انہی لوگوں نے کیے جن کو عوام مسترد کرچکے ہیں ۔آئی ایم ایف کے لوگوں کی موجودگی میں سی پیک کو شدید خطرات ہوسکتے ہیں اور پاکستان کئی دوستوں سے محروم ہوسکتا ہے۔حکومت نے آئی ایم ایف کی ذلت آمیز شرائط پر قرضہ لیا مگر اللہ کا عطا کردہ زکوة و عشر کے متبادل نظام کا باعزت راستہ اختیار نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ بھاری قرض میں قوم کو جکڑ کر ہماری سلامتی کے معاملات پر سوال اٹھائے جائیں گے اورپاکستان کے نیو کلیئر پروگرام کوبھی عالمی نگرانی میں دیئے جانے کا خطرہ ہے، داخلہ ، خارجہ پالیسی انہی کی چلے گی، عالمی قوتیں ان بھاری قرضوںکی آڑ میں پاک چین اقتصادی راہداری پر کنٹرول کا دباؤ ڈال سکتی ہیں، انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف ہو مسلم لیگ ن یا پیپلزپارٹی ان میں کوئی فرق نہیں۔
    سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی پاکستان ہی متبادل قوت ہے جماعت اسلامی کو اختیار و اقتدار ملنے سے ملک و قوم کو مشکلات سے نکالا جاسکتا ہے، جماعت اسلامی کی تاریخ گواہ ہے کہ اس کی ساکھ کا ہر کوئی اعتراف کرتا ہے اور ہمیں اپنی ساکھ پر فخر ہے۔ موجودہ حکومت قوم کے معاشی مسائل کو حل کرنے کی اہلیت نہیں رکھتی اور جب اہل لوگ نہ ہوں تو معاشی تنگدستی کیسے دورہوسکتی ہے،یہ خود کہتے ہیں کہ 3سو ارب ڈالر سے زیادہ غیر دستاویزی معیشت ہے۔ بیرون ملک پڑے تین سو 75ارب ڈالرز واپس لانے کے لیے بھی کچھ نہیں کیا جارہا۔عید کے بعد گھرگھر جاکر مہنگائی کیخلاف وسیع پیمانے پر مہم چلائیں گے ۔ اس موقع پر انہوں نے مقابلے کے امتحانات اردو میں لینے کی قرارداد کی منظوری پر ارکان سینیٹ کاشکریہ بھی ادا کیا ہے اور کہا ہے کہ قومی زبان کے فروغ کے بارے میں عدالت عظمی کے احکامات بھی موجود ہیںجن پر عمل نہیں کیا جارہا۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ اپنے بچوں کو اپنی مادری زبان میں سائنس اورٹیکنالوجی کی تعلیم دی جائے۔
                         
 

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس