Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

عوام کا موجودہ حکمرانوں سے اعتما د اٹھ چکا ہے، اس کو بحال کرنے کے لیے ضروری ہے کہ حکمران قوم سے کیے گئے وعدے پورے کریں۔امیرالعظیم


لاہور 12مئی 2019ء:جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہا ہے کہ وزیر اعظم کی جانب سے سرکاری ہسپتالوں میں پرائیویٹ ہسپتالوں کی طرز پر مینجمنٹ لانے کے بیان سے عوام میں تشویش پائی جاتی ہے۔ عوام کو صحت کی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے لیے ضروری ہے کہ سرکاری ہسپتالوں کی تعداد بڑھاتے ہوئے ان کے نظام میں بہتری لائی جائے ۔ محض زبانی کلامی اقدامات سے کچھ نہیں ہوگا۔ ماضی کے حکمران بھی اس قسم کے دعوے کرتے رہے، مگر اپنے علاج معالجے کے لئے بیرون ممالک جاتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ جو وزیر اعظم ادویات کی قیمتوں میں ہونے والے ہو شر با اضافے کو 72گھنٹوں میں واپس نہ لاسکے وہ کیسے سرکاری ہسپتالوں میں تبدیلی کی بات کرسکتے ہیں۔ عوام کا موجودہ حکمرانوں سے اعتما د اٹھ چکا ہے، اس کو بحال کرنے کے لیے ضروری ہے کہ حکمران قوم سے کیے گئے وعدے پورے کریں۔ انھوں نے کہا کہ صحت کی سہولیات فراہم کرنا حکومت کی بنیادی ذمہ داری ہوتی ہے مگر بد قسمتی سے ہر دور حکومت میں اس شعبہ کا استحصال کیا جاتا رہا ہے، جس کی وجہ سے عوام سرکاری ہسپتالوں سے علاج معالجے کی بجائے پرائیویٹ ہسپتالوں کو ترجیح دینے اور مہنگے علاج کروانے پر مجبور ہیں،جبکہ سرکاری ہسپتالوں کی حالت انتہائی ناگفتہ بہ ہے۔ غریب مریضوں کی شنوائی نہیں ہوتی، انھیں مہنگے ٹیسٹ اور مہنگی ادویات باہر سے لانے پر مجبور کیا جاتا ہے۔سرکاری ہسپتالوں میں ایک ایک بستر پر کئی کئی مریضوں کو لٹا یا جاتا ہے۔ امیر العظیم نے مزید کہا کہ شعبہ صحت پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ حکومت اس حوالے سے بجٹ میں خاطر خواہ اضافہ کرے اوراس بات کو یقینی بنایا جائے کہ ایک ایک پیسہ عوام کی فلاح و بہبود پر خرچ ہو۔ سرکاری ہسپتالوں میں کرپٹ عناصر کی سیاہ کاریاں میڈیا میں آتی رہتی ہیں۔ مریضوں کے ساتھ ہونے والے ناروا سلوک کی روک تھام کے لیے شکایات سیل کے نظام کو مضبوط کیا جائے اور شکایات درست ہونے کی صورت میں ذمہ داران کے خلاف سخت تادیبی کاروائی عمل میں لائی جانی چاہیے۔    

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس