Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حکمران آئی ایم ایف کی ڈکٹیشن پرتو عمل کرتے ہیں مگر اللہ اور رسول کے احکامات کو پس پشت ڈال دیتے ہیں ۔حافظ محمد ادریس


لاہور 10مئی 2019ء:    جماعت اسلامی پاکستان کے بزرگ راہنما اور سابق نائب امیر حافظ محمد ادریس نے جامع مسجد منصورہ میں جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے اپنے غریب عوام کے مفاد کو پس پشت ڈال کر آئی ایم ایف کے کہنے پر مہنگائی میں بے تحاشا اضافہ کردیا ہے  جس سے عام آدمی پریشان ہے ،حکمران آئی ایم ایف کی ڈکٹیشن پرتو عمل کرتے ہیں مگر اللہ اور رسول ۖ کے احکامات کو پس پشت ڈال دیتے ہیں ۔معیشت سودی قرضوں سے بحال نہیں ہوگی۔معاشی تنگ دستی سے بچنے کا ایک ہی طریقہ ہے کہ اللہ اور اس کے رسول ۖ سے جنگ بند کردی جائے اور سودی معیشت سے تائب ہوکر اسلام کا زکواة و عشر کا پاکیزہ نظام اپنایا جائے ۔رمضان المبارک ہمیں یہی درس دیتا ہے کہ اللہ تعالیٰ کے بن جائو گے تو تمھاری تمام پریشانیاں ختم ہوجائیں گی۔ رمضان قرآن کے نزول کا مہینہ ہے ،قوم اس ماہ مبارک میں عہد کرے کہ ملک میں قرآن کے نظام کے نفاذ کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔ معاشرے سے شرافت کا کلچر اٹھتا جارہا ہے ،جب حکمران شریفانہ زبان کی بجائے گالی کلچر پر اتر آئیں تو اس کا اثر معاشرے پر پڑتا ہے ۔
    حافظ محمد ادریس نے کہا کہ رمضان المبارک شروع ہوتے ہی اشیائے خورد ونوش کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ حکومت کی ناکامی اور نااہلی کا ثبوت ہے ۔آٹا چاول گھی چینی اور دالوں کی قیمتوں میں اضافے سے عام آدمی کی مشکلات اور پریشانیاں بڑھ گئی ہیں ،پانچ سات سو روپے دیہاڑی کمانے والا مزدور فاقوں پر مجبور ہوگیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت کا فرض تھا کہ عوام کو ریلیف دیتی مگر حکمران بے حسی اور لاپرواہی کی تمام حدیں پھلانگ گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے پی ٹی آئی سے جو توقعات اور امیدیں وابستہ کی تھیں وہ مایوسی میں بدل گئی ہیں۔جتنی جلدی موجودہ حکومت ناکام ہوئی ہے ملکی تاریخ میں کوئی دوسری حکومت ناکام نہیں ہوئی۔حکمرانوں نے پہلے بلند و بانگ دعوے اور وعدے کئے اور اب عوام کو روزانہ صبر کی تلقین کررہے ہیں ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت فوری طور پر کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں کمی کرے اور رمضان میںعوام کو ریلیف دینے کیلئے موثر اقدامات کئے جائیں۔
 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس