Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

نیکیوں کے ماہ مقدس رمضان المبارک کی آمد آمد ہے ، ماہ رمضان کا بھر پور استقبال کریں۔عمران رشید


 فیصل آباد / 28 اپریل 2019ء:جماعت اسلامی حلقہ پی پی 117کے امیر عمران رشیدنے کہا ہے کہ نیکیوں کے ماہ مقدس رمضان المبارک کی آمد آمد ہے۔اوریہ تلاوت قرآن، تروایح کے اہتمام اور نوافل سے اللہ تعالیٰ کی خوشنودی حاصل کرنے کا بہترین موقع ہے کارکنان ماہ رمضان کا بھر پور استقبال کریں۔ رمضان اللہ تعالی کی رحمتیں اور عنایتیں حاصل کرنے کا مبارک مہینہ ہے۔ اس ماہ مقدس میں اللہ رب العزت کو راضی کر کے دنیا و آخرت کی کامیابیاں حاصل کی جاسکتی ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سرگودھاروڈ پررمضان المبارک کے سلسلہ میں یوسی امراءکے اجلاس خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر جنرل سیکرٹری رانامحمداقرار،نائب امیر محمدسلیم انصاری، میاں شاہد، چوہدری عبدالغفور،رانامحمداسرار،امیرحسین اوردیگرذمہ داران بھی موجودتھے۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی پی پی117رمضان المبارک میں انشاءاللہ یونین کونسلزمیں دروس قرآن،دروس حدیث،اسلامی اصلاحی پروگرامات کاانعقاد کرےگی۔رابطہ عوام مہم کے سلسلے میں اب تک ہزاروں افراد جماعت اسلامی کی ممبر شپ حاصل کر چکے ہیں اور رمضان المبارک میں یہ سلسلے مزید آگے بڑھایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک سے قبل مہنگائی کا طوفان حکمرانوں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان بن چکا ہے۔نیز
جماعت اسلامی حلقہ پی پی115کے امیر میاںاجمل حسین بدرایڈووکیٹ،جنرل سیکرٹری یوسف گل پراچہ نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کے 9 ماہ ناکامیوں، مایوسیوں اور محرومیوں کا مجموعہ ہیں۔ حکومت کو تمام سیاسی جماعتوں نے کھل کھیلنے کا موقع دیا مگر حکومت میں موجودہر بارناکام رہنے والے وزراءایک بار پھر ناکام ہو گئے ہیں۔ پیپلز پارٹی، مسلم لیگ اور مشرف کے لوگو ں پر مشتمل پی ٹی آئی کی حکومت کے خلاف کسی کو احتجاج کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئے گی۔انہوں نے کہاکہ مال دار دولت سمیٹ رہاہے اور غریب دو وقت کی روٹی کے لیے پریشان ہے۔ اسے تعلیم اور علاج کی سہولت میسر ہے نہ اسے عدالتوں سے انصاف ملتا ہے۔ معاشی زبوں حالی کی اصل وجہ سودی نظام ہے،حکومت آئینی تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے سودی نظام معیشت کا خاتمہ کرے اور زکوٰة اور عشر کا پاکیزہ نظام نافذ کیا جائے تا کہ عام آدمی کا معاشی استحصال نہ ہو۔ انہوں نے کہاکہ سودی نظام کے ہوتے ہوئے ہم معاشی ترقی نہیں کر سکتے۔ ہم پاکستان میں ایسا معاشی نظام چاہتے ہیں جس میں حلال کمائی کے دروازے کھلیں اور حرام کے بند ہوں۔ انہوں نے کہاکہ اسلام کا ایک مکمل معاشی نظام ہے اور آئین پاکستان اسی نظام کو رائج کرنے کا مطالبہ کرتا ہے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس