Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

آج کے پرفتن دور میں عورت کو آزادی کے مصنوعی نعروں کے بجا ئے اسلام کے عطا کر دہ شرعی حقوق دلانے کی ضرورت ہے


 کراچی /سکھر 24 اپریل 2019ء: اسلام عورت کو اس کے تمام حقوق دلا کر ویمن اینڈ پاورمنٹ کو مضبوط کرتا ہے جبکہ فیمنیزم کی آڑ میںعورت بغاوت پر اکسائی جاتی ہے ہر وہ کام جو اسلام کی رو سے ناجا ئز ہے، فیمنیزم کی آڑ مین اپنے لیے جائزکر کے عورت کے نسوانی وقار کو مجروح کیا جا رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہارناظمہ جماعت اسلامی حلقہ خواتین سندھ عطیہ نثار نے سکھر،محراب پور،خیر پور اورکنڈیارو میں منعقدہ خواتین کانفرنس سے خطاب کے دوران خطاب مین کیا۔انہون نے مزید کہا کہ جدید تہذیب عورت سے شرم و حیا اورممتا چھین رہے ایک جانب تو ماں کی ممتا کو چھینا جا رہا ہے اور دوسری طرف جا ہلانہ رسم رواج کے ذریعے ا ±سے ا ±س کے وہ بنیادی حقوق بھی غصب کر لیے گئے ہیں جو اسلام نے عورت کو عطا کئے ہیں ،انہوں نے کہا کہ آج کے پرفتن دور میں عورت کو آزادی کے مصنوعی نعروں کے بجا ئے اسلام کے عطا کر دہ شرعی حقوق دلانے کی ضرورت ہے ،والد ین کی ذمے داری ہے کہ وہ اپنے بچوں کو خواتین کا احترم سکھائیں ہمارے بہت سے مسائل کی وجہ اختلاط مرد و زن ہے، جس سے اسلام نے بھی منع کیا ہے، ہم نے اس کو جینڈر رائٹس کا نعرہ لگا کر ہر جگہ عورت بٹھا دی ہے،تعلیمی اداروں اور ملازمت کی جگہ پر مخلوط ماحول کا خاتمہ کر کے محفوظ ماحول فراہم کیا جانا چاہے ہمیں نئی نسل کو دلائل کے ساتھ قائل کرناہوگا۔ دنیا مادیت پرستی کی طرف جا رہی ہے جس سے بے حیائی پروان چڑھ رہی ہے ہمیں اپنے فیملی یونٹ کو مضبوط کرنا ہوگا۔اس موقع پر نائب ناظمات سندھ عائشہ ودود،عابدہ عائشہ ودیگر ذمہ دارن و ضلع زون و شہر سے خواتین کی بھر پور تعداد موجود تھی۔کانفرنس سے عائشہ ودودنے اپنے خطاب میں کہا کہ عورت کے وقار کو بلند کر کے ہی معاشرے سے بے حیائی ختم کی جا سکتی ہے۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس