Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حکومت ماورائے عدالت اقدامات کا سدِ باب کرے، ایسے اقدامات سے بے چینی اور دہشت گردی پھیلتی ہے۔ویمن اسلامک لائرز


 کراچی 9اپریل ( ) ویمن اسلامک لائرز (WIL) فورم نے حسب روایت استحکام پاکستان کے حوالے سے کراچی بار اور ملیر بار میں سیمینار بعنوان’’ماورائے عدالت اقدامات کی قانونی حیثیت اور ریاست کی ذمہ داری ‘‘ کا انعقاد کیاگیا۔ سیمینار سے سیف الدین ایڈوکیٹ انچارج پبلک ایڈ کمیٹی جماعت اسلامی، محمد عاقل ایڈوکیٹ صدر ہائی کورٹ بار نعیم قریشی ایڈوکیٹ صدر کراچی بار، ناہید افضال ایڈوکیٹ ، شاہد حسن ایڈوکیٹ صدر اسلامک لائرز موومنٹ ، طلعت یاسمین ایڈوکیٹ چےئر پرسن ول فورم نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔مقررین نے کہا کہ ملک کی سا لمیت کا انحصار سرحدی تحفظ کے ساتھ ساتھ ملک میں امن و امان کی بہتر صور ت حا ل اور عوام کو آئین و قانون کے تحت ملنے والے بنیادی حقوق کی فراہمی پر ہے جو ریاست کا بنیادی فرض ہے اور آئین میں عدلیہ کو ان کا محافظ بنایا گیا ہے ۔ماورائے عدالت اقدامات کی وجہ سے نہ صرف عوام کے بنیادی حقوق سلب ہوتے ہیں بلکہ معاشرے میں تیزی سے پھیلتی ہوئی بے چینی، امن و امان کی خراب صورتحال اور دہشت گردی جیسے سنگین مسائل بھی پیدا ہوتے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت ماورائے عدالت اقدامات کا سدِ باب کرے اور آئین و قانون کے تحت مجرم کو گرفت میں لایا جائے ۔ صرف اسی طرح ہم اپنے ملک پاکستان کا دفاع بہترانداز میں کر سکیں گے ۔ دریں اثناء اسی سلسلے کا ایک اور سیمینار ملیر بار میں بھی رکھا گیا جس میں نائب صد ر سکندر علی شر ایڈوکیٹ اور جنرل سکریٹری فدا محمد ایڈوکیٹ ملیر بار نے اپنے خیالات کا اظہار کیا وکلاء کی بڑی تعداد نے ان سیمینارز میں شرکت کی ۔ سیمینار ز میں قرارداد بھی منظور کی گئی ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس