Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

اسلام عورتوں کے حقوق کے تحفظ کا علمبردار ہے اور وہ بے حیائی اور بے ہودگی کی اجازت نہیں دیتا ۔ذکراللہ مجاہد


لاہور 12  مارچ2019ء: امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ اسلام عورتوں کے حقو ق اور معاشرے میں ان کے جائز مقام کا سب سے بڑا محافظ ہے۔ دنیا کے تمام مذاہب کی نسبت عورت کو سب سے زیادہ حقوق اسلام نے دیئے ہیں ۔ اسلام عورتوں کے حقوق کے تحفظ کا علمبردار ہے اور وہ بے حیائی اور بے ہودگی کی اجازت نہیں دیتا ۔ اسلام نے عورت کو عزت ، حقوق اور معاشرے میں ایک اعلیٰ مقام عطاء کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کچھ جاہل اور اسلام سے لاعلم لوگ عورت کا استحصال کرتے ہیں تو اس کا مطلب اسلام اور ہمارے پورے معاشرے کو بدنام کرنانہیں ہونا چاہیے ، استحصال کرنے والا ٹولہ مرد و خواتین دونوں کا ہی استحصال کر رہا ہے ۔ان خیالات کا اظہار گذشتہ روز انہوں نے جماعت اسلامی علاقہ غربی لاہور کے منعقدہ اجلاس میں ذمہ داران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر علی ارتضی حسنی ، غلام حسین بلوچ ، خالد ، اکرم مغل ، طیب صدیقی ، نثار عابد، قار احمد ، انجم رضا خان سمیت دیگر عہدیداران نے شرکت کی ۔ ذکر اللہ مجاہد نے کہا کہ ہمارے ملک میں یہ کیسے حقوق کی بات کی جا رہی ہے جن کا نشانہ شرم و حیا کے ساتھ ساتھ ہماری اسلامی و معاشرتی اقدار ہیں جن کا مقصد مغرب کی طرح پاکستان میں بھی بے راہ روی کو پھیلا کر بے حیائی کو فروغ دینا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عورت کی آزادی کا مطلب اس کے جسم کی نمائش ، گھر سے بھاگ کا شادی رچانا نہیں بلکہ اس کے حقوق کا مطلب اس کی تعلیم و صحت ، تحفظ ، ملازمت اور وراثت میں حق دینا ہے۔ پاکستان اسلام کے نام پرمعرض وجود میں آنے والا ملک ہے اور یہاں کی عورتوں اور مردوں کے حقوق کا تحفظ اگر ممکن ہے تو صرف اور صرف قرآن و سنت کے نظام کے ذریعے ہی ممکن ہے ۔ امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے حالیہ پاکستان میں عورت کے حقو ق کے نام پر ہونے والے مظاہرے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ چند لبرل اور آزاد خیال مردو خواتین کی طرف سے کیا گیا مظاہرہ ان کی اسلام اور نظریہ پاکستان سے بیزاری کا اظہارہے۔ نام نہاد مغربی تہذیب کا غلام طبقہ عورت کے حقوق کا علمبردار نہیں بلکہ وہ عورت کے حقوق کی بجائے کچھ اور چیزوں میں دلچسپی رکھتا ہے ۔ یورپ ،امریکہ او رمغرب کو اپنا قبلہ ماننے والے حضرات یورپ اور امریکہ میں عورت کی حالت زار کو دیکھ لیں ۔ عورت وہاں مرد کی ہوس کا شکار اور مکمل طور پر غیر محفوظ ہے جبکہ ہمارے معاشرے میں عورت کو خاندانی نظام کی بنیاد پر عزت اورمکمل تحفظ حاصل ہے ۔ذکر اللہ مجاہد نے والدین پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اپنے بچوں کو اگر اس عفریت سے بچانا ہے تو خود بھی قرآن و سنت سے جڑیں اور بچوں کو بھی دین کی تعلیم دیں اور اپنے ملنے جلنے والوں میں بھی یہ شعور اُجاگر کری

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس