Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

پاک بحریہ نے ہندوستانی آبدوزکواپنی حدود سے پیچھے دھکیل کر ایک اور کامیابی حاصل کی ہے۔امیرالعظیم


لاہور6مارچ 2019ء:امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہا ہے کہ پاک بحریہ نے ہندوستانی آبدوزکواپنی حدود سے پیچھے دھکیل کر ایک اور کامیابی حاصل کی ہے۔اب ثابت ہوگیاہے کہ پاکستان کی بری،بحری اور فضائی افواج پیشہ وارانہ صلاحیت کی حامل ہیں اور دشمن کو ناکوں چنے چبواسکتی ہیں۔ہندوستانی آبدوزکو آسانی کے ساتھ تباہ کیاجاسکتا تھا مگر اسے واپس بھیج کر یہ پیغام بھارت سمیت پوری دنیا کو دیاگیا ہے کہ پاکستان امن پسند ملک ہے اور خطے میں کسی قسم کی جارحیت نہیں چاہتالیکن ہمارے اوپر جارحیت مسلط کرنے کی کوشش کی گئی تو پھر انڈیا کو بھرپورجواب دیاجائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز لاہور میں عوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ نریندرمودی عوامی اجتماعات میں مسلسل غلط بیانی کرتے ہوئے بھارتی عوام کے جذبات کو بھڑکانے اورانڈین میڈیا اشتعال انگیزی کے ذریعے جنگی جنون کو پھیلانے کی کوشش کررہا ہے۔الحمد للہ پاکستان کی تینوں مسلح افواج چاک وچوبند اور بھارتی جارحیت کامنہ توڑ جواب دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں۔یہ بات اب واضح ہوجانی چاہئے کہ پاکستان دفاعی لحاظ سے ایک مضبوط ملک ہے۔انڈیا کسی غلط فہمی میں نہ رہے۔ماضی میں بھی بھارت کو پاکستان کے خلاف جنگوں میں زلت ورسوائی کاسامناکرناپڑاتھا۔انہوں نے کہاکہ عالمی برادری پر بھارت کی دوغلی پالیسیوں کی حقیقت کھل جانی چاہئے۔ہندوستان جو دنیا میں پاکستان کو تنہاکرنے کاخواب دیکھ رہاتھا اب خود تنہاہوگیا ہے۔بھارتی وزیر اعظم نریندرمودی کے ہوتے ہوئے ہندوستانیوں کے لیے کسی اور دشمن کی ضرورت نہیں۔ڈبلیوایف کے رکن ممالک کو انڈیا سے روابط ختم کرنے کی ہدایت اور انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی وارننگ اس بات کاثبوت ہے کہ حالات تبدیل ہوچکے ہیں۔دنیا کو پاکستان بارے اپنی سوچ بدلنی ہوگی۔ہم خطے میں امن چاہتے ہیں مگر یہ قومی سلامتی کی قیمت پر ممکن نہیں۔امیر العظیم نے مزیدکہاکہ حکومت کی جانب سے مدارس کے خلاف منفی پروپیگنڈاقابل قبول نہیں۔مدارس کامکمل تحفظ کیاجائے۔پاکستان کے تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے لوگ دفاع وطن کی خاطر اپنی جانیں نچھاور کرنے کے لیے تیار ہیں۔فلاحی اداروں پرپابندیاں لگانے سے دشمن قوتوں کے موقف کو تقویت ملے گی،موجودہ حکومت اس حوالے سے دانشمندانہ اقدامات کرے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس